.

شام: الحسکہ میں ترکی نےشہریوں کے مکانات مسمار کردیے: تصاویر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ ترک فوج نے شمال مشرقی علاقے الحسکہ میں مقامی شہریوں کے بڑی تعداد میں گھر مسمار کرنے کے ساتھ ساتھ انہیں فوجی بنکروں میں تبدیل کردیا ہے۔

"إيزدينا" فائونڈیشن کی رپورٹ کے مطابق شامی فوج نے شمال مشرقی شام میں شہریوں کے گھروں کو فوجی کیمپوں میں تبدیل کرنے کے لیے کئی مکانات مسمار کردیے جب کہ شہریوں کے کئی گھروں پرقبضہ کرلیا گیا ہے۔

"إيزدينا" فائونڈیشن کی ٹیم نے الحسکہ شہر میں شہریوں کے ترکی کےہاتھوں مسمار ہونے والے گھروں اور ان پر ترک فوج کے قبضے کی تصاویر جاری کی گئی ہیں۔

انسانی حقوق گروپ نے الحسکہ میں مشرقی راس العین اور ابو راسین میں مسماری سے قبل سیٹلائٹ سے جاری کردہ تصاویر کے ساتھ ساتھ مسماری کے بعد کے مناظر جاری کیے ہیں۔

"إيزدينا" کی رپورٹ کے مطابق ترکی نے الحسکہ میں اپنی فوجی موجودگی کو یقینی بنانے کے لیے شہریوں کے گھروں کو فوجی چھائونیوں میں تبدیل کردیا ہے۔ ترک فوج کی طرف سے الحسکہ کی آبادی کو سیرین ڈیموکریٹک فورسز سے وفاداری کی سزا دی جا رہی ہے۔

انسانی حقوق گروپ کے مطابق ترک فوج نے دو ماہ سے راس العین میں لوگوں کو اپنی میتیوں کی مقامی قبرستانوں میں تدفین سے بھی محروم کررکھا ہے۔ اس گائوں میں کم سے کم 200 گھرہیں جن میں رہائش پذیر بیشتر شہری زراعت پیش ہیں۔