.

عراق میں دھوک گورنری میں پناہ گزین کیمپ کے قریب ترکی کی بمباری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی نے شمالی عراق کے صوبہ کردستان کی دھوک گورنری میں بیرسیفی کے مقام پر کرد جنگجوئوں کے ٹھکانوں پر بمباری کی۔ یہ بمباری یزیدی قبیلے کے ایک پناہ گزین کیمپ کے قریب کی گئی ہے۔

کردستان کے علاقے میں دھوک گورنری کے سرکاری ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ ترکی کی سرحد کے ساتھ زاخو سرحد کے شمال مشرق میں "درکار" کے مقام پر کرد جنگجوئوں کے ٹھکانوں پر متعدد میزائل داغے گئے۔

عراقی پارلیمنٹ کے ڈپٹی اسپیکر بشیر الحداد نے ترک حکومت سے عراق کے کردستان کے علاقے میں سرحدی علاقوں پر بمباری روکنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ترکی کی فوجی مداخلت سے خطے کے تناؤ میں اضافہ ہوگا اور دونوں ممالک کے تعلقات پر منفی اثرات مرتب ہوں گے۔

الحداد نے عراقی حکومت سے ترکی کی جارحیت کا تکرارروکنے ، سرحدوں کے تحفظ اور عراقی خودمختاری کو یقینی کے لیے ضروری اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے ترک حکومت پر زور دیا کہ وہ تمام فوجی کارروائیاں فوری طور پر بند کرے اور کرد مخالفین کے ساتھ جاری تنازعات کو بات چیت کے ذریعے حل کرے۔