.

عرب لیگ کا ہنگامی اجلاس آج، لیبیا کی صورت حال اور النہضہ ڈیم زیرِ بحث

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عرب لیگ کے وزراء خارجہ کا ایک ہنگامی اجلاس آج منگل کے روز منعقد ہو رہا ہے۔ یہ اجلاس مصر کی درخواست پر بلایا گیا ہے۔ اجلاس میں لیبیا کی صورت حال اور النہضہ ڈیم کا بحران زیر بحث آئے گا۔

یہ اجلاس مصری صدر عبدالفتاح السیسی کے اس اعلان کے بعد منعقد ہو رہا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ لیبیا میں مصر کی کسی بھی براہ راست مداخلت کو اب بین الاقوامی سطح پر قانونی حیثیت حاصل ہو گئی ہے۔ السیسی نے فوج کو ہدایت کی تھی کہ وہ ملک کے اندرون یا بیرون کسی بھی فوجی کارروائی کے لیے تیار رہیں۔

لیبیا میں فائر بندی، سیاسی حل تک رسائی اور بیرونی مداخلت روکنے کے لیے عرب ممالک کی کوششیں جاری ہیں۔ دوسری جانب لیبیا کی وفاق حکومت نے عرب لیگ کا ہنگامی اجلاس طلب کرنے کے حوالے سے مصر کی دعوت کو مسترد کر دیا۔ وفاق حکومت کی وزارت خارجہ کے مطابق وڈیو کے ذریعے بند کمرے کا اجلاس ایسے امور پر بحث کے لیے ٹھیک نہیں جو گہرائی میں جا کر تبادلہ خیال کے متقاضی ہیں۔

جہاں تک النہضہ ڈیم کے بحران کا تعلق ہے تو اقوام متحدہ نے مصر ، ایتھوپیا اور سوڈان تینوں ممالک پر زور دیا ہے کہ وہ اس ڈیم کے حوالے سے باہمی اختلافات کے حل کے لیے کام کریں۔ مصر نے اس معاملے کو سلامتی کونسل میں پیش کیا ہے جب کہ ایتھوپیا کی جانب سے اس اقدام کو مسترد کرتے ہوئے اس کی مذمت کی گئی ہے۔

یاد رہے کہ مصری صدر عبدالفتاح السیسی یہ باور کرا چکے ہیں کہ ان کی فوج سرحدوں کے اندر اور اس کے باہر ملک کا دفاع کرنے کی قدرت رکھتی ہے۔ انہوں نے خبردار کیا کہ مصر کی مغربی سرحد کی سلامتی کے لیے کسی خطرے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ السیسی کے مطابق لیبیا میں سرت اور الجفرہ کے شہر مصر کے حوالے سے سرخ لائن کی حیثیت رکھتے ہیں۔