.

بشارالاسد نے ماموں زاد رامی مخلوف کے مزید پر کاٹ دیے

رامی مخلوف کا بشارالاسد کے ماتحت خیراتی اداروں کے ساتھ تعلق ختم کر دیے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے صدر بشار الاسد اور ان کے ماموں زاد اور عالمی سطح پر کرپشن کی وجہ سے بدنامی کی حد تک شہرت رکھنے والے رامی مخلوف کے درمیان تعلقات میں کشیدگی کے بعد بشارالاسد نے رامی مخلوف کو اپنے ماتحت خیراتی ادارے العرین سے الگ کر دیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ ماضی میں ایک دوسرے خیراتی ادارے البستان میں ایک اہم ذمہ داری نھبانے والے مخلوف کو اس تنظیم سے بھی الگ کر دیا گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شام میں ہیومینٹری فاؤنڈیشن "العرین" نے گذشتہ جمعرات کو اسد فوج کی طرف سے ہلاک ہونے والے افراد کے اہل خانہ کو مالی گرانٹ تقسیم کرنے کے ساتھ ساتھ اپنی معاون فورس کے زخمیوں کو مالی گرانٹ تقسیم کرنے کا اعلان کیا۔ مذکورہ گرانٹس میں زخمی ہونے والے عام شہریوں کے لیے بھی محدود حصہ رکھا گیا ہے۔

العرین فاؤنڈیشن شامی حکومت کے صدر بشار الاسد کی براہ راست نگرانی میں کام کررہی ہے۔ بشارالاسد اور رامی مخلوف کے درمیان اختلافات ایک ماہ قبل سامنے آئے اور اس کے بعد ہی العرین فائونڈیشن کا قیام عمل میں لایا گیا۔

العرین نے اپنے قیام کے لمحے سے ہی تیزی سے کام کرنا شروع کردیا اور ایک سے زیادہ شامی گورنریوں میں شامی فوج کے متاثرہ خاندانوں کے بارے میں گھر گھر جا کر معلومات اکھٹی کیں۔ اس کے بعد اس نے براہ راست متاثرین میں امداد تقسیم کرنا شروع کردی۔

پچھلے ہفتوں میں اسد اور اس کے کزن بزنس مین رامی مخلوف کے مابین امداد کی جنگ دیکھنے میں آئی ہے۔ انھوں نے گذشتہ اپریل کے آخر سے ہی حکومت کے ساتھ مالی نظام سے اپنے اختلافات کا اعلان کیا تھا۔ رامی مخلوف البستان تنظیم میں اہم عہدے پر تھے۔ اگرچہ یہ تنظیم بھی براہ راست صدر اسد کے ماتحت تھی مگر اس میں رامی مخلوف کو کام کے مکمل اختیارات حاصل تھے۔

مبصرین کا خیال ہے کہ اپنی نگرانی میں ایک خیراتی ادارے کی بنیاد رکھنا صدر اسد کا اپنے رشتہ دار رامی مخلوف جو "البستان" فلاحی تنظیم کے ذمہ دار تھا کا فلاحی تنظیم کےساتھ تمام طرح کےتعلقات ختم کرنے کے مترادف ہے۔

اطلاعات کے مطابق العرین فائونڈیشن کے قیام کے بعد اس تنظیم نے صدر بشارالاسد کی آشیر باد سے البستان کے تمام دفتاتر اور اثاثہ جات پرقبضہ کرلیا۔ یوں صدر اسد نے نہ صرف نئی فلاحی تنظیم العرین سے اپنے ماموں زاد رامی مخلوف کو دور رکھا بلکہ البستان کے بھی پر کاٹ دیے۔ دوسری طرف رامی مخلوف کا کہنا ہے کہ وہ اپنے کاروباری اداروں کی بھاری رقم اس تنظیم کےذریعے سرکاری فوج کے ہلاک اور زخمی ہونے والے اہلکاروں کے خاندانوں کی بحالی پر صرف کررہے ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں