.

حوثیوں نے اقوام متحدہ کے اکاونٹ سے خطیر رقم لوٹ لی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں کی لوٹ مار کا ایک نیا اسکینڈل سامنے آیا ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ الحدیدہ شہر میں قائم مرکزی بنک میں اقوام متحدہ کے اکاونٹ سے حوثی باغیوں نے خطیر رقم ہتھیا لی ہے۔

ذرائع نے العربیہ اور الحدث ٹی وی چینلوں کو بتایا کہ بنک سے خطیر رقم نکالے جانے کے بعد یمنی حکومت نے الحدیدہ بندرگاہ پر بحری جہازوں کو لنگر انداز ہونے کے اجازت نامے جاری کرنے سے انکار کر دیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اقوام متحدہ کے یمن کے لیے خصوصی مندوب مارٹن گریفیتھس نے یقین دہانی کرائی ہےکہ حوثی باغی دوبارہ مرکزی بنک سے رقم نہیں لوٹیں گے۔

ذرائع نے بتایا کہ گریفیتھس کی ضمانت اور یقین دہانی کے بعد آئینی حکومت نے بحری جہازوں کو الحدیدہ بندرگاہ پر لنگر انداز ہونے کی اجازت دے دی ہے۔ اجازت ملنے کےبعد چار بحری جہاز اس بندرگاہ میں داخل ہوئے ہیں۔

گذشتہ ہفتے حوثی ملیشیا نے مرکزی بنک سے 60ملین ڈالر ایندھن ریونیو اور 84 ملین ڈالر اقوام متحدہ کو مطلع کیے بغیر نکالنے کا اعتراف کیا تھا۔