.

عراق حکام کی بغداد کے ہوائی اڈے پر کیٹوشیا راکٹ گرنے کی تردید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں سیکورٹی حکام کے میڈیا سیل نے بغداد کے بین الاقوامی ہوائی اڈے کے نزدیک راکٹ گرنے سے متعلق میڈیا رپورٹوں کی تردید کر دی ہے۔ اس سے قبل میڈیا رپورٹوں نے اس خبر کی تصدیق کی تھی کہ بغداد کے ہوائی اڈے کے ہال کے قریب ایک کیٹوشیا راکٹ گرا تاہم وہ پھٹ نہ سکا اور نہ کسی نقصان کا سبب بنا۔

پیر کے روز ایک ٹویٹ میں مذکورہ میڈیا سیل نے ذرائع ابلاغ سے یہ مطالبہ بھی کیا کہ وہ کسی بھی خبر کو نشر کرنے سے قبل سیکورٹی میڈیا سیل سے درست معلومات کی تصدیق کر لیا کریں۔

میڈیا رپورٹوں میں بتایا گیا تھا کہ راکٹ حملے کا مقصد دارالحکومت کے ہوائی اڈے پر امریکی فوجی اڈے کو نشانہ بنانا تھا۔ تاہم حکام نے ان تمام باتوں کی تردید کر دی۔

واضح رہے کہ عراقی سیکورٹی کے میڈیا سیل نے اتوار کو علی الصبح بتایا تھا کہ بغداد میں علی الصالح کے علاقے کی جانب سے گرین زون کی جانب ایک راکٹ داغا گیا۔ یہ راکٹ بلادی چینل کی عمارت کے نزدیک ایک گھر کے پڑوس میں گرا۔ اس کے نتیجے میں ایک بچہ زخمی ہو گیا اور گھر کو نقصان پہنچا۔

اسی طرح سیکورٹی فورسز نے دارالحکومت کے شمال میں التاجی کے عسکری کیمپ کی جانب داغے جانے والے راکٹ حملے کی کارروائی کو ناکام بنا دیا۔ ام العظام کے علاقے میں کیٹوشیا راکٹ اور اس کے لانچنگ پیڈ پر کنٹرول حاصل کر لیا گیا۔

یاد رہے کہ بغداد میں امریکی سفارت خانے کو ایران نواز مسلح ملیشیاؤں کی جانب سے پے درپے حملوں کا نشانہ بنایا جانے لگا ہے۔

اس سے قبل گزشتہ ماہ 8، 13 اور 18 جون کو راکٹ حملوں میں بغداد ایئرپورٹ کی اراضی، امریکی فوجی اڈے اور امریکی سفارت خانے کو نشانہ بنانے کی کوششیں کی گئی تھیں۔