.

"لیبی فوج سرت کے حوالے سے تمام امکانات کے لیے تیار ہے"

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی نیشنل آرمی نے کہا ہے کہ مسلح‌ افواج تزویراتی اہمیت کے حامل شہر سرت میں قومی وفاق حکومت کی وفادار ملیشیائوں سے نمٹنے کے لیے تمام امکانات پرعمل درآمد کے لیے تیار ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق لیبی فوج میں اخلاقی رہ نمائی کے امور کے سربراہ جنرل خالد المحجوب نے کہا ہے کہ سرت کے حوالے سے فوج تمام ممکنہ اقدامات کے لیے تیار ہے۔

انہوں نے یہ بیان ایک ایسے وقت میں دیا ہے جب دوسری طرف علاقائی اور عالمی توجہ لیبیا میں تیل کے ٹرمینل سمجھے جانے والے شہر سرت پر مرکوز ہے۔ لیبیا کی قومی وفاق حکومت کی وفادار ملیشیائوں نے سرت شہر کا محاصرہ کرلیا ہے جب کہ نیشنل آرمی نے سرت میں داخل ہونے والی قومی وفاق حکومت کی فورسز کا بھرپور جواب دینے کی تیاری کی ہے۔ نیشنل آرمی نے سرت کے ساحلی علاقے میں مخالف ملیشیا کی نقل وحرکت پر نظر رکھنے کے لیے انٹیلی جنس معلومات جمع کرنا شروع کی ہیں۔

لیبی فوج میں اخلاقی رہ نمائی کے سربراہ جنرل خالد المحجوب نے العربیہ ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ترکی نے اپنے اجرتی جنگجوئوں کی بڑی تعداد مصراتہ میں جمع کی ہے۔

انہوں نے دعویٰ‌کیا کہ ترکی نے لیبیا میں لڑنے کے لیے 19 ہزار اجرتی جنگجو قومی وفاق حکومت کی مدد کے لیے بھیجے ہیں۔
خیال رہے کہ ہفتے کے روز مقامی ذرائع نے العربیہ چینل کو بتایا کہ قومی فاق حکومت کے زیرانتظام ایک فوجی گاڑی الکراریم کے علاقے سے نکل کر آگے بڑھی تاہم بعد میں وہ واپس مصراتہ میں السکت کیمپ میں چلی گئی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ دارالحکومت کے جنوب میں واقع تیسرے ہوائی اڈے الوطیہ سے ترکی کا تیسرا مال بردار جہاز واپس چلا گیا ہے۔