.

یمن میں سیلاب اور طوفانی بارشوں نے تباہی پھیلا دی، 13 افراد ہلاک

سیلاب سے ہونے والی تباہی کے ہولناک مناظر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن کے مختلف شہروں میں طوفانی بارشوں کے نتیجے میں سیلاب نے تباہی مچا دی ہے جس کے نتیجے میں اب تک کم سے کم 13 افراد ہلاک اور ہزاروں کی تعداد میں مکانات اور دیگر املاک تباہ ہو گئی ہیں۔ سیلاب سے سڑکوں، شہری آبادیوں اور فصلوں کو بھی غیرمعمولی نقصان پہنچا ہے۔

یمن کے مغربی ساحلی شہر الحدیدہ میں گذشتہ دو روز کے دوران ہونے والی طوفانی بارشوں کے نتیجے میں سیلاب آگیا جس کے نتیجے میں 13 افراد ہلاک ہوگئے۔ الزھرہ، القناوص اور اللحیہ ڈاریکٹوریٹ میں کم سے کم 50 مکانات پانی میں بہہ گئے۔

سیلاب سے فوت ہونے والوں میں ایک ہی خاندان کے چار افراد شامل تھے۔ محمد حسن الربوعی نامی خاندان کے چار افراد القناوص ڈاریکٹوریٹ میں سیلابی ریلے میں بہہ گئے۔ اس علاقے میں سیلابی پانی نے کئی ایکڑ رقبے پر پھیلی فصلیں تباہ کردیں اور سیکڑوں مویشی ہلاک کر دیے۔

یمن کے جنوبی علاقے اس وقت آفت زدہ قرار دیے گئے ہیں جہاں کئی افراد سیلاب کے دوران لاپتا ہیں۔ متاثرہ آبادیوں تک زمینی رسائی مشکل ہو رہی ہے۔الحدیدہ گورنری کےسیکرٹری ولید القدیمی نے عالمی امدادی اداروں سے مدد کی اپیل کی ہے۔ انہوں‌ نے الزام عاید کیاکہ ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغی سیلاب کو بھی اپنے توسیع پسندانہ اور عوام دشمن عزائم کی تکمیل کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔