حوثی باغیوں‌ نے الحدیدہ میں 80 شہریوں کو انسانی ڈھال کے لیے یرغمال بنا لیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یمن میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں نے الحدیدہ گورنری کے علاقے الدیھمی میں کم سے کم 80 شہریوں کو انسانی ڈھال کے طور پر استعمال کرنے کے لیے انہیں یرغمال بنا لیا ہے۔ یرغمال بنائے گئے شہریوں میں بزرگ شہری، بچے اور خواتین بھی شامل ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق حوثی باغیوں‌ نے الدریھمی میں عام شہریوں کے گھروں میں گھس کر انہیں فوجی بیرکوں میں تبدیل کر دیا اور گھروں کے اندر خندقیں‌ کھود دی ہیں۔

یمنی فوج کے العمالقہ مرکز برائے اطلاعات کی طرف سے جاری ایک بیان میں‌ کہا گیا ہے کہ حوثی باغیوں‌ نے گھروں میں جن لوگوں کو انسانی ڈھال کے طور پر یرغمال بنایا ہے ان میں بچے اور بوڑھے شامل ہیں۔ لڑائی کے باوجود حوثی باغی انہیں گھروں سے نکلنے کی اجازت نہیں دے رہے ہں۔

بیان میں کہا گیاہے کہ حوثی باغیوں‌ کی بچھائی بارودی سرنگ پھٹنے سے ایک شخص اپنے دو بچوں جن کی عمریں 10 اور 12 سال کے درمیان ہیں سمیت ہلاک ہو گیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں