.

سعودی عرب: پبلک پارک میں پرندوں کے غیرقانونی شکار کی ویڈیو وائرل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ایک پبلک پارک میں پرندوں کے غیرقانونی شکار کے لیے بچھائی گئی جال کی ایک ویڈیو سامنے آنے کے بعد سعودی وائلڈ لائف اتھارٹی نے اس واقعے کا نوٹس لے لیا ایک ویڈیو کلپ پر تبصرہ کیا ، جس میں ایک عوامی پارک میں پرندوں کے غیر قانونی شکار کے جالوں کی موجودگی کو ظاہر کیا گیا ہے۔

وائلڈ لائف اتھارٹی نے ایک بیان میں کہا کہ عوامی پارک میں پرندوں کے غیرقانونی شکار کی ویڈیو سامنے آنے کے بعد اس واقعے کی انکوائری شروع کردی گئی ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ مملکت میں جال کے ذریعے پرندوں کے شکار کو غیرقانونی قرار دیا گیا ہے۔ اس کے باوجود ایسا کرنے والوں کے خلاف قانون کے مطابق سخت کارروائی عمل میں‌ لائی جائے گی۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ جال کے ذریعے پرندوں کو پکڑنا نقل مکانی کرنے والے پرندوں کے لیے ایک انتہائی مہلک ذریعہ ہے۔ جال بغیر کسی استثنا کے تمام قسم کے پرندوں کا شکار کرتا ہے۔ ان میں مہاجر ، مقامی اور معدومیت کے خطرے سے دوچار پرندے بھی شامل ہیں۔ جال میں ایسے پرندے بھی پھنس جاتے ہیں جن کا شکار سختی سے ممنوع ہے۔

وائلڈ لائف اتھارٹی نے تمام شکاریں اور کھیتوں کے مالکان سے قواعد و ضوابط اور ہدایات کی پابندی کرنے پر زور دیا ہے۔ حکومت نے خبردار کیا ہے کہ جو لوگ پرندوں کے غیرقانونی شکار کے مرتکب پائے گئے وہ کسی رعایت کےمستحق نہیں۔ انہیں جرمانوں سمیت دیگر سزائوں کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

ایک ویڈیو کلپ میں دکھایا گیا ہے کہ کچھ لوگوں نے پرندوں کی ایک بڑی تعداد کے شکار کے لیے ایک پارک میں کھمبوں کے درمیان جال بچھا رکھا ہے۔ ویڈیو میں پرندے پرواز کے دوران ٹھوکر کھاتے ہوئے جال میں میں پھنس جاتے ہیں اور شکاری ان کا شکار کرلیتے ہیں۔ شکاری گینگ کی شناخت نہیں ہوسکی۔