.

عراق کے تین دیہاتوں پر ترک فوج کی بمباری، فصلیں نذرآتش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترک فوج کی جانب سے عراق کی سرحدی خلاف ورزیوں کا سلسلہ جاری ہے۔ کل ہفتے کے روز ترک فوج نے عراق کے متعدد دیہات پر گولہ باری اور فصلوں کو نذرآتش کر دیا۔

عراق کے سرحدی علاقے باتیفا کے ڈائریکٹر زیر فان حسین نے العربیہ چینل کو بتایا کہ گذشتہ روز بانکی کے مقام پر ترک فوج اور کرد جنگجووں کے درمیان جھڑپ ہوئی۔ اس جھڑپ کے بعد ترک فوج نے عراق کے سرحدی علاقوں کھڑی فصلوں پر بھی بمباری کی جس کے نتیجے میں فصلوں کو نقصان پہنچا ہے۔ انہوں‌ نے بتایا کہ ہفتے کے روز ترک فوج نے شمالی عراق کے صوبہ کردستان کے تین دیہاتوں کو نشانہ بنایا جب کہ شمالی شہر دکراری کے قریب ایک گائوںب میں ایک کار کو نشانہ بنا یا گیا۔

ذرائع نے بتایا کہ ترک جنگی طیاروں‌ نے ایک کار پر بمبار کی تاہم بم نشانہ سے خطا ہو گیا اور کار میں موجود افراد بچ نکلنے میں‌ کامیاب ہو گئے۔

قبل ازیں ترک طیاروں نے عراق کے جبل لینک میں دھوک کے مقام پر گولہ باری کی تاہم اس حملے میں ہونے والے جانی نقصان کی تفصیلات سامنے نہیں آسکیں۔

خیال رہے کہ ترک فوج نے عراق کے سرحدی علاقے باتیفا میں 15 جون کو کرد جنگجووں کے خلاف آپریشن شروع کیا تھا۔ زاخو کے مقام پر ترک فوج عراق میں گھس کر 45 سے 50 کلو میٹر اندر کاررائیاں کرتی رہی ہے۔