.

سعودی عرب کے شمالی پہاڑوں کی عمر 37 ملین سال ہے: ماہرین ارضیات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ماہرین ارضیات نے دعویٰ کیا ہے کہ مملکت شمالی پہاڑوں کی عمر 37 ملین سال ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق شاہ عبد العزیز یونیورسٹی سے تعلق رکھنے والے جیولوجیکل محققین اور فوسیل ڈیپارٹمنٹ میں سعودی جیولوجیکل سروے اتھارٹی کے ماہرین نے مملکت کے شمالی علاقے میں واقع الرشراشیہ کی عمر کا سائنسی بنیاد پر مطالعہ کیا۔

سمندری کیکلیروس کوکولیتس فوسلزاپنی نوعیت کے پہلے مطالعے میں استعمال ہوئے ہیں اور رواں سال کے اگست کے شمارے جرنل آف اپلائیڈ ایکولوجی اور ماحولیاتی تحقیق میں شائع ہوئے ہیں۔

ککولیتھ فوسلز سنگل خلیہ والے الرجیکل خلیوں کے منٹ اسٹالکٹائٹس ہیں اور ان کی موت اور ٹکڑے ٹکڑے ہونے کے بعد وہ اپنی قدیم باقیات کو بکھیرتے ہیں جس کی مقدار 3-30 مائکرو میٹر سے ہوتی ہے اور ایک مائکرومیٹر پیمائش کی ایک اکائی ہے جس کی لمبائی بہت کم ہوتی ہے جہاں 1 ملی میٹر 1000 مائکرو میٹر ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ نے کنگ عبد العزیز یونیورسٹی میں محکمہ میرین جیولوجی - کالج آف سائنسز کے ایک فیکلٹی ممبر سے ملاقات اور اس حوالے سے ان کےخیالات کی جان کاری حاصل کی۔ فیکلٹی کے رکن ڈاکٹر محمد حامدی الجحدلی جو بحری الکاہل اور کیریبین میں ریسکیو جہاز جوائڈس ریزولوشن کے بورڈ پر لگاتار دو بار عالمی ریسرچ مشن میں حصہ لینے والے پہلے سعودی سمجھے جاتے ہیں۔ فلوریڈا اسٹیٹ یونیورسٹی میں ماسٹر اور ڈاکٹریٹ کی سطح کے لیے اپنی تعلیم کے دوران ان کی تحقیق مملکت کے شمال میں پہاڑوں پر مائکرو کولیٹ میرین فوسلز کے ذریعہ شائع ہوئی تھی۔

الجحدلی نے انکشاف کیا کہ یہ پہاڑ نیم گہرے رنگ کے چونےکے پہاڑوں پر مشتمل ہیں جو 37 ملین سال پرانے ہیں ۔ ارضیاتی تحقیق کے مطابق یہ پہاڑ تقریبا20 کروڑ سال قبل ارضیاتی ریکارڈ میں نمودار ہوئے تھے۔