آتش گیر غباروں کے بعد اسرائیل کے غزہ میں حماس کے ٹھکانوں پر زمینی اور فضائی حملے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی سے سرحد کی دوسری طرف قائم اسرائیلی کالونیوں پر راکٹ حملوں اور آتش گیر غباروں کے دوبارہ حملوں کے بعد اسرائیل نے جوابی کارروائی کرتے ہوئے غزہ کی حکمراں 'حماس' کے ٹھکانوں پر زمینی اور فضائی حملے کیے ہیں۔

خیال رہے کہ حالیہ ایام میں جنوبی غزہ سے اسرائیل پر آتش گیر مواد سے بھرپور غبارے پھینکے گئے جس کے نتیجے میں عبرانی ریاست کے علاقوں میں آگ بھڑک اٹھی۔

اسرائیلی فوج نے جوابی کارروائی کرتے ہوئے غزہ میں حماس کے ٹھکانوں پر زمینی اور فضائی حملے کیے ہیں تاہم ان حملوں میں کسی قسم کے جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی۔

اسرائیلی فوج کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ جنگی طیاروں، فوجی ہیلی کاپٹروں اور ٹینکوں کی مدد سے غزہ میں حماس کے نیول ڈیفنس سسٹم اور دیگر تنصیبات کو نشانہ بنایا گیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ کارروائی غزہ کی پٹی سے آتش گیر غبارے چھوڑے جانے پر اسرائیل کا رد عمل ہے۔

ادھر فلسطینی ہلال احمر کےمطابق اسرائیلی طیاروں کی بمباری سے غزہ میں ایک حملہ خاتون اور ایک تین سالہ بچہ زخمی ہوئے ہیں جنہیں اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں