.

سعودی ہیری ٹیج کمیشن کے زہراہتمام دستکاری کی اہمیت پر ماہرین کا تبادلہ خیال

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزارت ثقافت کی ہیریٹیج اتھارٹی نے متعدد دلچسپی رکھنے والے افراد اور ماہرین کے ساتھ دو ورچوئل میٹنگز کا اہتمام کیا جن کا مقصد شہری ورثہ اور دستکاری کو ورثے کے دو اہم ستونوں کی حیثیت دینا اور ان دونوں شعبوں کو ترقی دینے کے لیے طریقہ کار وضع کرنا ہے۔

پہلی میٹنگ کل اتوار کو ساڑھے آٹھ بجے منعقد ہوئی جسے وزارت ثقافت کے ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ 'یوٹیوب' براہ دراست دکھایا گیا۔ اجلاس میں سعودی کاریگروں اور دست کاری کے ماہرین کے روایتی طریقہ کار کو جدید طریقوں میں تبدیل کرنے کا عنوان دیا۔ دوسرا اجلاس 18 اگست منگل کو "فن تعمیر اور مقام کی خصوصیت" کے عنوان سے ہو گا۔

پہلی میٹنگ میں کاریگر احمد عننقاوی، نورا القحطانی اور ڈاکٹر رریج الدھیش نے دستکاریوں کی معاشی اور معاشرتی اہمیت کے بارے میں بات کی۔ انہوں‌ نے باور کرایا کہ دست کاری ایک اہم ثقافتی پیداوار اور ایک قومی معاشی وسیلہ ہے۔

اجلاس کے مہمان کاریگروں نے دستکاری کے روایتی سماجی طریقوں، ان کے اثرات اور ان میں تبدیلی اور ترقی کے طریقوں پر تبادلہ خیال کیا۔

دوسری میٹنگ کنگ عبد العزیز یونیورسٹی میں فن تعمیر کے سابق پروفیسر ڈاکٹر عدنان عباس ، اور وزارت بلدیہ اور دیہی امور میں شہری منصوبہ بندی اور ڈیزائن سینٹر کے ڈائریکٹر انجینئر ضی الضویان کی زیر صدارت ہوگی جس میں شاہ عبد العزیز یونیورسٹی کے شاہی ماحولیات کے کالج آف آرکیٹیکچر اور منصوبہ بندی کے سربراہ احمد خان الہاشمی گفتگو کریں گے۔ اس میں موروثی فن تعمیراتی شناخت، اس کے مکانات اورشناخت کو بحال کرنے کے ممکنہ حل اور جغرافیائی اور آب و ہوا کے فرق کے باوجود شہروں کے مابین شہری مماثلت کی روشنی میں کھوئے ہوئے مقامات کے تشخص کو بحال کرنا جیسے موضوعات بات چیت کی جائے گی۔