.

خامنہ ای کی ایرانیوں کو بیرون ملک جائیدادیں خریدنے اور آئی فون کی درآمد سے روک دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسلامی جمہوریہ ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای ایرانی شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ 'آئی فون' کی درآمد روک دیں اور بیرون ملک کسی قسم کی جائیدادوں کی خریداری سے باز رہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق اپنے ایک ویڈیو بیان میں خامنہ ای نے کہا کہ بیرون ملک سے ایران میں آئی فون کی درآمد پر انہیں گہری تشویش ہے۔ گذشتہ برس ایرانی شہریوں‌ نے آئی فون اور اس طرز کے دیگر مہنگے اسمارٹ فون کی درآمد پر تقریبا نصف ارب ڈالر کی رقم خرچ کی حالانکہ اس کا کوئی'جواز' نہیں تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ اگرچہ یہ ساری رقم پبلک سیکٹر سے ادا کی گئی مگر اس کی روک تھام حکومت کی ذمہ داری ہے۔

تاہم خامنہ ای کے دفتر نے ان کے بیان کا یہ حصہ آفیشل ویب سائٹ پر شائع نہیں کیا ہے۔

ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے شہریوں‌ پر زور دیا کہ وہ بیرون ملک جائیدادوں کی خریداری سے باز رہیں‌۔ انہوں‌ نے کہا کہ ایران کے لیے شہریوں کا دوسرے ملکوں میں جائیدادیں خریدنا ایک بڑا مسئلہ ہے۔ حکومت کو اس سے نمٹنا ہو گا۔

گذشتہ دو سال کے دوران ایرانی شہریوں‌ کی بڑی تعداد نے ترکی جیسے ممالک میں بڑی مقدار میں‌ جائیدادیں خرید کی ہیں۔ ایران میں کرونا کی وبا پھیلنے کے باوجود بیرون ملک جائیدادوں کی خریداری کا سلسلہ جاری رہا ہے۔

اگست 2019ء کو ایران کی سرکاری نیوز ایجننسی 'ارنا' نے ایک رپور‌ٹ میں بتایا تھا کہ گذشتہ چھ ماہ کے دوران ایرانی شہریوں کی ترکی کی طرف نقل مکانی اور وہاں پر جائیدادوں کی خریداری میں 50 فی صد اضافہ ہوا ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا تھا کہ چھ ماہ میں ایرانی شہریوں نے ترکی میں 2200 جائیدادیں خرید کیں جن پر 550 ملین امریکی ڈالر کی رقم خرچ کی گئی۔