.

تونس: راشد الغنوشی کو عوام نے آبائی شہر سے بھگا دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تونس کے جنوب مشرقی صوبے قابس میں واقع الحامّہ شہر کے مقامی لوگوں نے پارلیمںٹ کے اسپیکر اور النہضہ موومنٹ کے سربراہ راشد الغنوشی کو بھگا دیا۔ اس موقع پر لوگوں نے الغنوشی سے مطالبہ کیا کہ وہ ان کے شہر سے چلے جائیں اور پھر لوٹ کر ہر گز نہ آئیں۔ اس واقعے سے اندازہ ہوتا ہے کہ عوام الغنوشی کے حوالے سے سخت غیظ و غضب رکھتے ہیں۔

الغنوشی کی شرمندگی کا باعث بننے والا یہ واقعہ اتوار کی شام پیش آیا۔ الغنوشی اپنے آبائی شہر الحامہ پہنچے تھے جو النہضہ موومنٹ کے حامیوں کا گڑھ ہے۔ ان کی آمد کا مقصد کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے بعد شہر میں صحت کے حوالے سے صورت حال کی جان کاری حاصل کرنا تھا۔ تاہم پارلیمںٹ کے اسپیکر کو آمد کے فورا بعد ہی شہریوں کی جانب سے غم وغصے کا سامنا کرنا پڑا۔ لوگوں نے اکٹھا ہو کر الغنوشی کے سامنے "اِرحل" (چلے جاؤ) کے پر زور نعرے لگانے شروع کر دیے۔

الحامہ کے شہری الغنوشی کے پر سخت برہم تھے جنہوں نے اربوں کی دولت کا مالک ہونے کے باوجود شہر میں کرونا کی وبا کا مقابلہ کرنے کے لیے 5 ہزار تونسی دینار (2000 ڈالر) جیسی چھوٹی سی رقم عطیہ کی۔

الغنوشی تونس میں بدترین سیاسی شخصیات میں سرفہرست قرار دیے گئے ہیں جن پر عوام کو اعتماد نہیں رہا اور عوام مستقبل میں الغنوشی کا کوئی کردار نہیں چاہتے۔ یہ بات رواں ماہ اگست میں Sigma Conseil ادارے کی جانب سے کیے گئے ایک سروے میں سامنے آئی ہے۔ اس سروے کے نتائج تونس کے عربی روزنامے "المغرب" نے شائع کیے۔