.

تونس : ٹیکنوکریٹس پر مشتمل نئی حکومت کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تونس میں نامزد وزیر اعظم ہشام المشیشی نے پیر کی شام سرکاری طور پر نئی حکومتی تشکیل صدر قیس سعید کے حوالے کر دی۔

بعد ازاں المشیشی نے ایک پریس کانفرنس میں آزاد ٹیکنوکریٹس پر مشتمل کابینہ کا اعلان کیا۔ اس اقدام کا مقصد سیاسی تنازعات سے کنارہ کش رہتے ہوئے ملک کی معیشت کو درست کرنا ہے۔

المشیشی کے مطابق ان کی کابینہ میں خود مختار شخصیات شامل ہیں۔ اس طرح گیند پارلیمنٹ کے کورٹ میں منتقل ہو چکی ہے۔ اب پارلیمنٹ حکومت کو اعمتاد کا ووٹ دینے کے لیے اجلاس منعقد کرے گی۔ چھ ماہ کے دوران ملک میں تشکیل پانے والی یہ دوسری حکومت ہے۔

المشیشی کا مزید کہنا تھا کہ "سیاسی جماعتوں اور پارلیمانی گروپوں کے ساتھ مسلسل مشاورت اور ملک کی اقتصادی، سیاسی اور سماجی صورت حال کا جائزہ لینے کے بعد خود مختار اور اہلیت کے حامل افراد (ٹیکنوکریٹس) کی حکومت تشکیل دینے کی ضرورت محسوس ہوئی جو اقتصادی اور سماجی صورت حال پر توجہ مرکوز کرے اور تونس کے عوام کے ساتھ ان کے استحقاق کے مطابق معاملہ کرے"۔

المشیشی کی حکومت میں 28 وزراء اور ریاستی وزراء (وہ وزراء جن کی علاحدہ سے وزارت نہ ہو) شامل ہیں۔

تونس کے صدر قیس سعید نے 46 سالہ ہشام المشیشی کو گذشتہ ماہ نئی حکومت تشکیل دینے کی ذمے داری سوپنی تھی۔ المشیشی اس سے قبل الیاس الفخفاخ کی حکومت میں وزیر داخلہ کے منصب پر فائز تھے۔

المشیشی نے اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ ان کی حکومت مکمل خود مختاری کے ساتھ کام کرے گی۔