.

لیبی فوج 'سِرت' شہر میں ترک نواز ملیشیاوں سے لڑنے کے لیے تیار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی نیشنل آرمی نے کل سوموار کے روز کہا ہے کہ ترکی کی حمایت یافتہ ملیشیاوں کی سرت اور الجفرہ کی طرف روانگی کے بعد وہ ہر طرح کے حالات کے لیے تیار ہے۔

الکرامہ آپریشن کنٹرول روم کی طرف سے 'فیس بک' پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مسلح‌ افواج سرت اور الجفرہ میں ترک نواز ملیشیاوں سے لڑنے کے لیے تمام تر تیاریاں کر لی ہیں۔ جب یہ معلومات سامنے آئیں کہ ترک کی وفادار ملیشیائیں علاقے میں حملے میں اپنی قوت مجتمع کر رہی ہیں لیبی فوج نے بھی اپنی تیاریاں تیز کر دی ہیں۔

ادھر ایک دوسرے ذرائع نے العربیہ چینل کو بتایا کہ فوج نے امریکا اور یورپ کو جنگ بندی سے متعلق اپنی شرائط سے آگاہ کر دیا ہے۔

لیبی فوج نے جنگ بندی کے لیے شرط عاید کی ہے کہ ملیشیائیں فوری طور پر سرت اور الجفرہ سے نکل جائیں۔ اس کے علاوہ پورے ملک سے قومی وفاق کی غیرملکی جنگجووں پر مشتمل ملیشیائوں کو عالمی نگرانی میں نکال باہر کیا جائے۔

نیشنل آرمی نے ترکی کے تمام فوجی اڈے ختم کرنے پر زور دیا ہے۔ اس کےساتھ ساتھ اس کا کہنا ہے کہ کسی بھی جنگ بندی فارمولے کی تجویز سے قبل یہ تمام شرائط تسلیم کرنا ہوں گی۔

فوج نے زور دیا ہے کہ ترکی لیبیا میں‌ موجود اپنی تمام فوج واپس بلائے اور ترکی اور قومی وفاق حکومت کے درمیان طے پائے معاہدے ختم کیے جائیں۔

لیبیا میں تعینات کیے گئے ترک عسکری مشیریوں کی واپسی اور تمام غیرقانونی ملیشیاوں کے ہتھیار ڈالنے کا ٹائم فریم دیا جائے۔ مسلح‌ افواج نے قومی وفاق حکومت کی شمولیت کے بغیر تیل کی تمام تنصیبات کے تحفظ پر بھی زور دیا ہے۔