.

اسرائیل نے غزہ کو صرف ایندھن کی سپلائی کی اجازت دی ہے: قطری سفیر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

العربیہ ذرائع نے کل منگل کے روز خبر دی ہے کہ فلسطین میں قطر کے سفیر محمد العمادی نے غزہ کی حکمران حماس کو ناکہ بندی میں آسانی پیدا کرنے کے معاہدے کے بارے میں آگاہ کیا۔ انہوں‌ نے حماس کی قیادت کو بتایا کہ اسرائیلی حکام سے حماس میں رقم کے داخلے پر تبادلہ خیال کیا ہے تاہم اسرائیل غزہ کو صرف تیل کی سپلائی پر تیار ہوا ہے۔

ذرائع نے نشاندہی کی کہ قطری سفیر اسرائیلیوں کے ساتھ غزہ میں قطر کے منصوبوں کے کام کو آسان بنانے کے لیے بات چیت کر رہا ہے۔ العمادی نے حماس کو اسرائیل سے صرف ایندھن کے داخلے کی منظوری سے آگاہ کیا۔

"العربیہ" کے نامہ نگار منگل کے روز خبر دی تھی کہ قطری سفیر محمد العمادی اسرائیل پہنچے ہیں اور انہوں نے اسرائیلی عہدیداروں سے ملاقات کی ہے۔ اس ملاقات میں انہوں‌ نے اسرائیلی حکام سے کہا ہے کہ وہ غزہ کو ایندھن کے ساتھ ساتھ رقوم کی منتقلی کی بھی اجازت فراہم کریں۔

یہ پیش رفت ایک ایسے وقت میں سامنے آئی ہے جب اسرائیلی میڈیا نے اطلاع دی ہے کہ اسرائیلی فوج ، موساد اور شن بیٹ (جنرل سیکیورٹی سروس) کے ایک سکیورٹی وفد نے قطری حکام سے غزہ کی صورتحال پر تبادلہ خیال کے لیے دوحہ کا دورہ کیا تھا۔

انہوں نے وضاحت کی کہ اسرائیلی فوج میں جنوبی بریگیڈ کے کمانڈر جنرل ہرزی حلیوی حال ہی میں دیگر سیکیورٹی افسران کے ہمراہ دوحا پہنچے جہاں انہوں‌ نے انہوں نے قطری دارالحکومت میں مقیم حماس کےسیاسی شعبے کے سربراہ اسماعیل ھنیہ اور ان کے نائب صالح العاروری کے ساتھ بالواسطہ غزہ میں جنگ بندی کے حوالے سے بات چیت کی۔

اس کے علاوہ منگل کے روز العربیہ نے خبر دی کہ اسرائیلی وفد نے قطر پر زور دیا تھا کہ وہ غزہ کو رقوم کی ادائی کا سلسلہ جاری رکھے تاکہ غزہ میں کشیدگی کو مزید بڑھنے سے روکا جا سکے۔