.

حماس کے سربراہ اسماعیل ھنیہ حسن نصراللہ سے ملاقات کے لیے بیروت پہنچ گئے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فلسطینی تنظیم'حماس' کے سیاسی شعبے کے سربراہ اسماعیل ھنیہ جماعت کے ایک اعلیٰ سطحی وفد کے ہمراہ قطر سے لبنان کے دارالحکومت بیروت پہنچ گئے ہیں۔ وہ اپنے اس دورے کے دوران ایرانی حمایت یافتہ شیعہ ملیشیا حزب اللہ کےسیکرٹری جنرل حسن نصراللہ سمیت دیگر لبنانی لیڈروں سے ملاقات کریں گے۔

لبنان میں حماس کے مقامی رہ نما اسامہ حمدان نے پریس کو بتایا کہ اسماعیل ھنیہ یقینی طور پر حزب اللہ کے سربراہ حسن نصراللہ سے ملیں گے۔ لبنان کے دورے میں ان کے ایجنڈے میں حسن نصراللہ سے ملاقات شامل ہے۔

خیال رہے کہ اسماعیل ھنیہ منگل کی شام بیروت پہنچے تھے۔یہ ان کا 27 سال کے بعد لبنان کا دورہ ہے۔ سنہ 1993ء میں اسرائیل نے سیکڑوں فلسطینیوں کو لبنان بے دخل کر دیا تھا۔ ان میں ھنیہ بھی شامل تھے۔

کل بدھ کو لبنانی پارلیمنٹ کے اسپیکر نبیہ بری سے ملاقات کے بعد ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے اسماعیل ھنیہ نے کہا کہ ان کی جماعت فلسطینی پناہ گزینوں‌ کو ان کے ملک سے باہر کسی اور جگہ آباد کرنے کی سخت مخالفت کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ ہم فلسطینی مہاجرین کو دوسرے ملکوں میں مستقل طور پر آباد کرنے کے خلاف ہیں۔ لبنان میں فلسطینی پناہ گزین کیمپ امن، استحکام اور مفاہمت کا عنوان ہیں۔ فلسطینی لبنان کے اندرونی معاملات میں کسی قسم کی دخل اندازی نہیں کریں گے بلکہ فلسطینی قوتیں تمام لبنانیوں کے درمیان پل کا کام کریں گی۔

انہوں‌ نے کہا کہ لبنان میں فلسطینی پناہ گزینوں کا قیام عارضی ہے۔ ہم یہاں مہمان ہیں اور لبنان ہمارا میزبان ہے۔ لبنان میں فلسطینیوں کو مستقل آباد کرنے کا کوئی فارمولا قبول نہیں کریں‌ گے۔

خیال رہے کہ ھنیہ ایک ایسے وقت میں لبنان پہنچے ہیں جب دوسری طرف فلسطینی جماعتوں کے سیکرٹری جنرل کی سطح پر ایک کانفرنس آج بیروت میں ہو رہی ہے۔ اس کانفرنس میں فلسطینی صدر محمود عباس کی شرکت بھی متوقع ہے۔ کانفرنس میں فلسطینی علاقوں کے اسرائیل سے الحاق کی سازشیں ناکام بنانے کے لیے متفقہ لائحہ عمل طے کرنے پرغور کیا جائےگا۔