.

دبئی : غیر ملکیوں کے لیے طویل المیعاد "ریٹائرمنٹ ویزا" متعارف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

دبئی میں حکومت کی جانب سے دنیا کے مختلف علاقوں میں ریٹائرڈ افراد کے لیے ایک نیا منصوبہ متعارف کرایا گیا ہے۔ اس پروگرام کو "ریٹائر اِن دبئی" کا نام دیا گیا ہے اور یہ خطے میں اپنی نوعیت کا پہلا منصوبہ ہے۔ یہ اسکیم دبئی کے حکمراں شیخ محمد بن راشد آل مکتوم کہ ہدایت پر "دبئی ٹورزم" اور "جنرل ڈائرکٹوریٹ آف ریزیڈنسی اینڈ فارن افیئرز" کے تعاون سے متعارف کرائی گئی ہے۔

بدھ کے روز اعلان کردہ اس پروگرام کے تحت متحدہ عرب امارات میں مقیم یا بیرون ملک موجود غیر ملکی جن کی عمر 55 برس سے زیادہ ہے وہ "ریٹائرمنٹ ویزا" کے لیے درخواست دے سکتے ہیں۔ یہ ویزا ہر پانچ برس بعد قابل تجدید ہو گا۔ ویزے کے خواہش مند افراد متعلقہ ویب سائٹ ‪www.retireindubai.com کے ذریعے درخواست دے سکتے ہیں۔ ویزے کے حصول کے لیے شرائط و ضوابط لاگو ہوں گے۔

ویزے کے حصول کے لیے درج ذیل امور میں سے کسی ایک کا پورا ہونا ضروری ہے :

درخواست دہندہ کی ماہانہ آمدنی 20 ہزار درہم (تقریبا 5500 ڈالر) ہونی چاہیے خواہ یہ سرمایہ کاری کے ذریعے ہو یا پھر پینشن کی صورت میں .. یا .. اس کا بینک بیلنس 10 لاکھ درہم (تقریبا 2.75 لاکھ) امریکی ڈالر ہو .. یا .. اس کی ملکیت میں دبئی میں 20 لاکھ درہم (تقریبا 5.5 لاکھ ڈالر) مالیت کی جائیداد ہو۔

پروگرام کے پہلے مرحلے میں متحدہ عرب امارات میں مقیم افراد سے درخواستیں وصول کی جائیں گی جنہوں نے دبئی میں دس برس سے زیادہ کام کیا اور وہ ریٹائرمنٹ کی عمر تک پہنچ چکے ہیں۔

متحدہ عرب امارات نے دو سال قبل ایک قانون منظور کیا تھا جس کے ذریعے امارات کی سرزمین پر آنے والے افراد کے لیے ریٹائرمنٹ کے بعد طویل المیعاد ویزا متعارف کرایا جا سکے۔ اس قانون کے ذریعے بالخصوص 55 برس سے زیادہ عمر کے افراد کے لیے ویزے کی پیش کش کی گئی تھی۔

اس قانون کو 2019ء کے آغاز پر لاگو کرنا شروع کیا گیا تھا۔