.

بیروت:دھماکےکےایک ماہ بعد بندرگاہ کے داخلی راستے سے 4۰35 ٹن امونیم نائٹریٹ برآمد

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لبنانی فوج نے دارالحکومت بیروت کی بندرگاہ کے ایک داخلی راستے کے نزدیک سے امونیم نائٹریٹ کی سوا چار ٹن سے زیادہ مقدار برآمد کرنے کی اطلاع دی ہے۔

لبنانی فوج کے انجنیئروں کی ٹیم نے بیروت کی بندرگاہ میں واقع ایک گودام میں تباہ کن دھماکے کے ٹھیک ایک ماہ بعد یہ کارروائی کی ہے اور اس کے داخلی راستے نمبر 9 کے نزدیک سے خطرناک کیمیاوی مواد امونیم ٹائٹریٹ کی یہ مقدار برآمد کی ہے۔

اس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انجنیئرنگ ٹیم اب اس کیمیاوی مواد کو ٹھکانے لگانے کے لیے کام کررہی ہے۔

قبل ازیں بیروت میں زور دار دھماکے میں تباہ شدہ عمارتوں کا ملبہ ہٹانے کی کارروائی کے دوران میں ایک شخص کے زندہ ہونے کا اشارہ ملا ہے۔جمعرات کی صبح ایک ریسکیو کتے نے ایک عمارت کے ملبے تلے دبے ہوئے اس شخص کا سراغ لگایا ہے۔

واضح رہے کہ بیروت کی بندرگاہ کے ایک گودام میں امونیم نائٹریٹ کی 2750 ٹن مقدار ذخیرہ کی گئی تھی۔چار اگست کو اس میں پہلے معمولی دھماکا ہوا تھا اوراس کے بعد زور دار تباہ کن دھماکا ہوا تھا جس نے لبنانی دارالحکومت میں قیامت صغریٰ برپا کردی تھی۔

اس کے نتیجے میں 160 افراد ہلاک اور چھے ہزار سے زیادہ زخمی ہوگئے تھے۔اس دھماکے سے ہزاروں عمارتیں تباہ ہوچکی ہیں اور کم سے کم تین لاکھ افراد بے گھر ہوئے ہیں۔لبنانی حکام کے مطابق دھماکے سے بیروت شہر کا 40 فی صد حصہ بری طرح تباہ ہوچکا ہے۔

ابھی تک یہ واضح نہیں ہوسکا ہے کہ بندرگاہ کے گودام میں امونیم نائٹریٹ کی اتنی زیادہ مقدار کیوں گذشتہ سات سال سے پڑی ہوئی تھی۔ البتہ حکومت اس کی موجودگی سے آگاہ تھی لیکن اس نے اس کو شہر سے باہر کسی اور محفوظ جگہ منتقل کرنے یا کسی ناگہانی صورت حال میں انسانی جانوں کے تحفظ کے لیے کوئی اقدام نہیں کیا تھا۔