.

سعودی عرب : نکاح کے آن لائن اندراج کی سروس کا دائرہ تمام صوبوں تک وسیع

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے وزیر انصاف ڈاکٹر ولید الصمعانی نے https://ezawaj.sa کے پلیٹ فارم کے ذریعے نکاح کے آن لائن اندراج کی خدمات کا دائرہ مملکت کے تمام صوبوں تک وسیع کرنے کی ہدایات جاری کر دی ہیں۔ یہ ہدایات ریاض میں اس سروس کے تجرباتی آغاز کی کامیابی کے بعد سامنے آئی ہیں۔

سعودی وزارت انصاف کے مطابق نکاح کے آن لائن اندراج کی سروس کے ذریعے بہت سے سابقہ اقدامات مختصر ہو جائیں گے جب کہ متعدد سرکاری محکموں کی کارروائیوں کی ضرورت باقی نہیں رے گی۔

وزارت کا کہنا ہے کہ شادی کے خواہش مند افراد اس ویب سائٹ کے ذریعے اپنے علاقے کے نزدیک ترین اجازت یافتہ نکاح خواں سے تاریخ اور وقت طے کر سکیں گے۔ اس کے لیے درخواست دہندہ کو ezawaj.sa کے ویب پورٹل پر جا کر اپنے متعلقہ کوائف اور معلومات کی تفصیلات فراہم کرنا ہوں گی۔ مزید برآں یہ کہ اسمارٹ ڈیوائس کے ذریعے درخواست دینے والے کی بائیو میٹرک تصدیق بھی کی جا سکے گی۔

وزارت انصاف کے مطابق یہ سروس سعودی عرب میں نکاح کے اندراج کے طریقہ کار کے حوالے سے ایک بڑی اور مثبت تبدیلی ہے۔ مزید یہ کہ "ای- زواج" کا پلیٹ فارم استعمال کرنے والوں کو نکاح کی تصدیق کے لیے عدالت ، طبی ٹیسٹ کے نتائج کے لیے میڈیکل سینٹرز اور شادی کے اندراج کے لیے شہری احوال کے مرکز کے چکر نہیں لگانا پڑیں گے۔ یہ تمام امور مکمل طور پر آن لائن ہو چکے ہیں۔ اس کے علاوہ اب کاغذی شکل میں نکاح نامے کا سلسلہ بھی ختم کر دیا گیا ہے۔

اس سلسلے میں اعلی سطح کی خدمات پیش کرنے کے لیے سعودی وزارت انصاف نے خود کو ڈیجیٹل طور پر وزارت صحت، وزارت داخلہ کی سول اسٹیٹس ایجنسی، نیشنل انفارمیشن سینٹر اور حکومت کے الکٹرونک انٹر ایکشن پروگرام "يسر" کے ساتھ مربوط کر لیا ہے۔