.

الخلیفی کا قطری کمپنی کے ذریعے 'فیفا' کے سیکرٹری جنرل کے لیے محل خریدنے کا اعتراف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

پیرس سینٹ جرمین اور بی این میڈیا گروپ کے صدر اور قطر کے ناصر الخلیفی کے خلاف مقدمے کی سماعت بدھ کے روز سوئزرلینڈ میں ہوئی جس میں ان پر مببنہ بدعنوانی کے الزامات عاید کیے گئے ہیں۔عدالت نے بین الاقوامی فٹ بال فیڈریشن 'فیفا' کے سابق سکریٹری جنرل جیروم والکے کا موقف بھی سنا۔

عدالت کے اندر سے العربیہ کے نمائندے کا کہنا تھا کہ جیروم والکے نے اپنے اور ناصر الخلیفی کے مابین ایک خفیہ میل کا انکشاف کیا۔ نامہ نگار نےعدالتی ذرائع کے حوالے سے بتایا "بی این اسپورٹس" نے فرانسیسی والکے کو رشوت دے کر نشریاتی حقوق حاصل کیے تھے۔ "فیفا" دستاویزات نے فرانسیسی عہدیدار پر الزام لگایا تھا کہ اس نے فیڈریشن کے اعتماد کو نقصان پہنچایا ہے۔ایسے ریکارڈ اور خطوط موجود ہیں جو الخلیفی اور والکے کے مابین مشکوک لین دین کو ثابت کرتے ہیں۔

الخلیفی نے فیفا کے سابق سکریٹری جنرل کے لیے ایک قیمتی 'محل' کی خریداری سے متعلق عدالت کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے اس بات پر زور دیا کہ یہ کام ایک قطری کمپنی نے انجام دیا ہے۔ میرا اس محل کو خریدنے کا کوئی ارادہ نہیں تھا لیکن قطری کمپنی نے اسے خرید لیا۔

جج نے الخلیفی سے کہا کہ استغاثہ آپ پر والکے کے ساتھ بدعنوانی کا معاہدہ کرنے کا الزام عائد کر رہا ہے۔ آپ نے نشریاتی حقوق کے بدلے ایک قیمتی محل ان کو خرید کر دلایا۔ معلوم ہوا کہ الخلیفی نے قطری کمپنی قائم کی تھی جس نے اس گھر کی خریداری کی ذمہ داری سنبھالی تھی۔ پھر قطری کمپنی کی ملکیت عبد القادر الصدیق کو منتقل کر دی۔

ایک اور تناظر میں الخلیفی نے اعتراف کیا کہ اس نے قطر کے امیر اور فیفا کے سابق سکریٹری جنرل کے مابین ایک ملاقات کا اہتمام کیا۔ سوالوں کے جواب میں الخلیفی نے بات کو مبہم رکھنے کی کوشش کی۔

فرانسیسی کلب پیرس سینٹ جرمین اور "بی این" میڈیا گروپ کے صدر اور قطری ناصر الخلیفی اور فرانسیسی بین الاقوامی فٹ بال فیڈریشن کے سابق سکریٹری جنرل ، جیروم والکے کو سوئس عدالت کے سامنے 2026 اور 2030 ورلڈ کپ کے فائنل کے لئے ٹیلی ویژن نشریاتی حقوق دینے سے متعلق بدعنوانی کے ایک مقدمے پوچھ تاچھ کا سامنا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں