.

"عمارۃ الحرمین" وزٹ پروگرام بہ تدریج دوبارہ شروع کرنے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

الحرمین الشریفین کے انتظامی امور کے ذمہ دار ادارے "الحرمین الشریفین جنرل پریزیڈنسی' نے 'عمارۃ الحرمین' نمائش وزٹ پروگرام پر کرونا وبا کی وجہ سے عاید کی گئی پابندی بہ تدریج ہٹانے اور زائرین کو عمارہ الحرمین کی نمائش کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ‌ کے مطابق الحرمین جنرل پریزیڈنسی نے گذشتہ جب کے مہینے وزارت صحت کی ہدایات کی روشنی میں وزٹ پروگرام بند کر دیا تھا۔ تاہم حال ہی میں الحرمین کے انتظامی امور کے سربراہ ڈاکٹر عبدالرحمان السدیس نے یکم ربیع الاول 1442ھ سے 'عمارہ الحرمین' نمائش کے وزٹ کہ کرونا ایس او پیز کے تحت دوبارہ اجازت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

عمارہ الحرمین کیا ہے؟

'عمارۃ الحرمین' ایک نمائش گاہ ہے جہاں پر ماضی میں مسجد حرام اور مسجد نبویﷺ میں استعمال ہونے والی اشیا یا ان کے نمونے محفوظ کیے گئے ہیں۔ ان میں آرکیٹیکچرل عناصر ،نوشتہ جات، ماضی میں حرم شریف میں استعمال ہونے والی اشیا، آلات، برتن اور قدیم تہذیبوں کے دور میں استعمال ہونے والی اشیا شامل ہیں۔ الحرمین الشریفین کی زیارت کرنے والے مسلمان زائرین کو عمارہ الحرمین کی سیر کرائی جاتی ہے جس میں انہیں الحرمین الشریفین کی نسبت سے ماضی میں استعمال کی گئی اشیا دکھائی جاتی ہیں۔ یہ نمائش پوری دنیا میں اپنی نوعیت کی ایک منفرد کوشش ہے۔ اس نمائش کا افتتاح 25 شوال 1420ھ کو شہزادہ عبدالمجید بن عبدالعزیز کے ہاتھوں ہوا۔ یہ نمائش 1200 مربع میٹر جگہ پر بنائی گئی ہے۔ اس کا بیرونی منظر بھی قدیم اور جدیم اسلامی فن تعمیر کا عمدہ امتزاج ہے۔

اس نمائش گاہ میں مسجد کے بیرونی احاطے، گیلری کی تصاویر، لکڑی کا زینہ جس کی مدد سے خانہ کعبہ کی چھت پر چڑھا جاتا تھا۔ غلاف کعبہ کے پرانے پارچے، ستارہ العکبہ کے ٹکڑے، حرمین شریفین کی نادرو نایاب تصاویر اور خلیفہ سوم حضرت عثمان بن عفان رضی اللہ عنہ کے دور میں ہاتھ سے لکھا قرآن پاک کا ایک نسخہ بھی محفوظ ہے۔

اس کے علاوہ اس نمائش میں سنہ 1589ء کا مسجد نبوی کا ایک منبر، زمزم کے کنوئیں سے پانی نکالنے والے برتن اور 200 سے زیادہ نوادرات شامل ہیں۔