.

ایران نے اپنا معاندانہ کردار جاری رکھا ہوا ہے : کمانڈر امریکی مرکزی کمان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی مرکزی کمان کے کمانڈر کینیتھ میکنزی کا کہنا ہے کہ ایران نے خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کا سلسلہ جاری رکھا ہوا ہے تاہم امریکا خطے کے ممالک کے ساتھ شراکت میں تہران کے کسی بھی معاندانہ رویے کا منہ توڑ جواب دینے کے لیے تیار ہے۔

انٹرنیٹ پر جاری ہونے والی امارات مرکز برائے مطالعات و تحقیقات سے گفتگو میں میکنزی نے کہ اکہ ایران اپنے معاندانہ کردار پر عمل پیرا ہے ، اس چیز نے خلیجی ممالک کو دفاعی طور پر تیاری پر مجبور کر دیا ہے۔

میکنزی نے باور کرایا کہ خطے کا امن صرف امریکا پر منحصر نہیں بلکہ ایسے شراکت دار موجود ہیں جو کسی بھی دشمنانہ نقل و حرکت کا مقابلہ کرنے کے لیے تیار ہیں۔

امریکی کمانڈر کے مطابق واشنگٹن کے خطے میں بنیادی مفادات ہیں۔ ان میں مشرق وسطی کے امن کو برقرار رکھنا اور جہاز رانی کی آزادی اور تیل کی ترسیل کو یقینی بنانا شامل ہے کیوں کہ تیل کے نرخ اور ان ذخائر کا انحصار اسی بات پر ہے۔

خلیج میں موجود امریکی بحری جہاز اور طیارے امریکی مفادات اور خطے میں شراکت داروں کے مفادات کے تحفظ کی نگرانی کرتے ہیں۔

جنرل میکنزی نے انکشاف کیا کہ اس وقت خلیجی ممالک کے لیے بیلسٹک میزائل شکن میزائلوں کے دفاعی نظام کو مضبوط بنانے پر کام ہو رہا ہے۔

امریکی کمانڈر نے باور کرایا کہ دہشت گرد تنظیم "داعش" کے خلاف معرکہ جاری ہے۔ تنظیم کے 10 ہزار جنگجو ابھی تک شام اور عراق میں موجود ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ داعش تنظیم آسانی سے شکست سے دوچار نہیں ہو گی اور اس کی بقاء کے حالات بھی تک قائم ہیں۔ تنظیم کے خلاف معرکہ کئی نسلوں تک جاری رہ سکتا ہے۔