.

حزب اللہ ملیشیا کا الناصریہ کے باشندوں پر مخالفین کے خلاف ہتھیار اٹھانے پر زور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عراق میں ایک شیعہ ملیشیا حزب اللہ کی جانب سے کربلا میں مقتدیٰ الصدر گروپ کے حامیوں کی طرف سے ریلیوں پر حملوں کو تخریب کاروں کی طرف سے منظم تخریبی کوشش قرار دیا ہے۔ حزب اللہ ملیشیا نے الناصریہ شہر کے عراقی باشندوں سے کہاہے کہ وہ تخریب کاروں اور شہر میں فسادات پھیلانے والوں کے خلاف ہتھیار اٹھائیں۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز کربلا میں احتجاج کے دوران مارے جانے والے نوجونواں کی حمایت میں نکالی جانےوالی ریلیوں پر مقتدیٰ الصدر کے حامیوں نے حملے کیے تھے جس پر ایران نواز گروپ عراقی حزب اللہ نے اس پر سخت برہمی کا اظہار کیا ہے۔

حزب اللہ کے ایک عہدیدار ابو علی العسکری نے کہا کہ گذشتہ روز کربلا میں جو کچھ ہوا وہ ناقابل قبول اور کھلی تخریب کاری ہے۔ انہوں‌ نے کہا کہ تخریب کار گروپ میں الناصریہ شہر کے بعض نوجوان بھی شامل ہیں جنہیں اس گروپ سے علاحدگی اخیار کرنے کے ساتھ ساتھ الناصریہ شہر کو تخریب کاروں سے پاک کرنا چاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ عراق کے مقدس شہروں کو ہرقسم کی اشتعال انگیزی اور تخریب کاری سے محفوظ ہونا چاہیے۔

قبل ازیں سماجی کارکنوں نے کربلا میں نکالی جانے والی ریلیوں پر مقتدیٰ الصدر کےحامی عناصر کی طرف سے حملوں اور مظاہروں کو منتشر کرنے کا الزام عاید کیا تھا۔