ایرانی صدر کے معاون محمد باقر نوبخت بھی کرونا وائرس کا شکار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

ایران میں صدر حسن روحانی کے معاون اور پلاننگ اینڈ بجٹنگ آرگنائزیشن کے ڈائریکٹر محمد باقر نوبخت کا کہنا ہے کہ وہ کرونا وائرس سے متاثر ہو گئے ہیں۔

اس حوالے سے اپنی ٹویٹ میں نوبخت نے کہا کہ "کام سے بھرپور ایک ہفتہ گزارنے کے بعد میں طبی مرکز گیا جہاں کرونا ٹیسٹ کا نتیجہ مثبت آیا"۔ انہوں نے مزید بتایا کہ "میں اس وقت ڈاکٹروں کی ہدایت کے مطابق طبی نگرانی میں ہوں اور مزید ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں ، میری عمومی حالت بہتر ہے"۔

یاد رہے کہ ایرانی صدر حسن روحانی نے منگل کے روز ریاست کے تینوں بنیادی ستونوں کے سربراہان کے ساتھ مقررہ اپنی ملاقات منسوخ کر دی تھی۔ یہ اقدام پارلیمنٹ کے اسپیکر محمد باقر قالیباف سے کرونا کا متعدد وائرس منتقل ہونے کے اندیشے کے سبب کیا گیا۔ وائرس سے متاثرہ قالیباف نے پیر کے روز کرونا کے مریضوں کے لیے مختص ہسپتال کا دورہ کیا تھا۔

بعض سرکاری عہدے داران کی جانب سے قالیباف کے مذکورہ دورے کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا گیا کہ یہ پروٹوکول کو نظر انداز کرنے کے مترادف ہے۔ تاہم قالیباف نے اپنے اقدام کا دفاع کرتے ہوئے ٹویٹ میں کہا کہ "ان کے اس دورے کا مقصد طبی عملے کا حوصلہ بڑھانا تھا"۔

یاد رہے کہ ایرانی حکومت کے کئی عہدے داران کرونا وائرس سے متاثر ہو کر فوت ہو چکے ہیں۔ ان میں رہبر اعلی علی خامنئی کے دفتر کے ملازمین، ایرانی پاسداران انقلاب کے افسران اور پارلیمنٹ کے ارکان شامل ہیں۔

ایران کو اس وقت کرونا وائرس کی تیسری لہر کا سامنا ہے جس کی شدت نے حکام کو مجبور کر دیا کہ وہ دارالحکومت تہران میں ایک ہفتے کے لیے مکمل لاک ڈاؤن کر دیں۔ علاوہ ازیں ملک کے کئی دیگر صوبوں میں بھی سخت قیود وضع کی گئی ہیں۔

ایران میں انسداد کرونا کمیٹی کے رکن محمد رجا محبوب فر انکشاف کر چکے ہیں کہ ملک میں اس وبائی مرض کا شکار ہونے والے افراد کی تعداد سرکاری طور پر اعلان کردہ اعداد و شمار سے 20 گنا زیادہ ہے۔ تاہم حکام سیاسی اور سیکورٹی وجوہات کی بنا پر حقیقی تعداد ظاہر نہیں کرنا چاہتے۔ انہوں نے باور کرایا کہ حکومت نے سیاسی اور سیکورٹی اسباب کی بنا دسمبر 2019ء سے کرونا کی وبا کے پھیلاؤ کو چُھپایا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں