شام میں ہلاک پاسداران انقلاب کے اہلکاروں کی میتیں 4 سال بعد ایران کے حوالے

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ایران کے ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ چار سال قبل شمالی شام کے علاقے حلب میبں شام میں خان طومان معرکے میں ہلاک ہونے والے سپاہ پاسداران انقلاب کے سات اہلکاروں کی میتں تہران کےحوالے کی گئی ہیں۔

خبر رساں دارے 'تسنیم' کے مطابق شام میں ایرانی پاسداران انقلاب کے ان چاروں عناصر کی میتیں ان کے ورثا کے حوالے کی گئی ہیں۔ یہ اہلکار مئی 2016ء کو خان طومان کے مقام پر شامی باغیوں کے ساتھ لڑائی میں مارے گئے تھے۔ مقتولین کی شناخت ڈی این کے ذریعے کی گئی ہے جس کے بعد ان کی رضا حاجی زادہ، محمد بلباسی، حسن رجائی فر، زکریا شیری، مجید سلیمانیان اور مہدی نظری کے ناموں سے کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ سنہ 2016ء‌کو حلب کے نواحی علاقے خان طومان میں ہونے والی لڑائی میں ایرانی پاسداران انقلاب کے 80 جنگجو ہلاک ہوگئے تھے۔ اس لڑائی میں مارے جانے والے ایرانی فوجیوں‌ میں 17 سینیر افسران شامل ہیں جب کہ 21 افسر زخمی ہوئے تھے۔ لبنانی حزب اللہ ملیشیا اور افغان جنگجوئوں پر مشتمل فاطمیون ملیشیا کے جنگجوئوں کی ہلاکتیں اس کے علاوہ ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں