.

امارات اور اسرائیل ایک دوسرے کے شہریوں کے لیے ویزہ فری قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاھو نے منگل کے روز اعلان کیا ہے کہ اسرائیل اور متحدہ عرب امارات نے دونوں مُمالک کے شہریوں کو سفری ویزا سے استثنا دینے پر اتفاق کیا ہے۔ اس طرح مُتحدہ عرب امارات واحد خلیجی عرب ملک ہے جس کے شہری بغیر ویزے کے اسرائیل میں داخل ہو سکیں گے۔

اسرائیلی وزیراعظم نے ایک بیان میں کہا کہ"ہم اپنے شہریوں کو ٹریول ویزا سے استثنا دینے پر متفق ہیں۔" دونوں ملکوں کے مابین متعدد معاہدوں پر دستخط کرنے کے لیے آئے اماراتی وفد سے بات کرتے ہوئے نیتن یاہو نے کہا کہ ہم دوطرفہ تعلقات کو مزید مستحکم کریں گے اور ایک دوسرے کے لیے مزید چھوٹ دیں گے۔

خیال رہے کہ متحدہ عرب امارات نے اگست میں اسرائیل کو تسلیم کرنے کے بعد گذشتہ ماہ صہیونی ریاست کے ساتھ باقاعدہ تعلقات کے قیام کا معاہدہ کیا تھا۔ آج منگل کے روز اسرائیل اور امارات نے ایک دوسرے کے شہریوں کو ویزے سے مستثنیٰ قرار دینے سمیت تین دوسرے معاہدوں پر دستخط کیے۔

متحدہ عرب امارات کے وزیر مملکت برائے مالی امور نے کہا کہ ہم افراد اور سرمائے کی آزادانہ نقل و حرکت کے لیے پرعزم ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اقتصادی کارکردگی کے لحاظ سے ہم سر فہرست ممالک ہیں۔ اسرائیل کے ساتھ معاہدے کثیر جہتی اور فائدہ مند ثابت ہوں گے۔