.

حماس اپنے حریفوں کو نشانہ بنانے کے لیے ترکی میں سائبر بیس استعمال کر رہی ہے : رپورٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی اخبار The Times کا کہنا ہے کہ فلسطینی مزاحمتی تنظیم حماس اپنے حریفوں کو نشانہ بنانے کے لیے ترکی میں ایک خفیہ ’سائبر بیس‘ کا استعمال کر رہی ہے۔

اخبار نے مغربی انٹیلی جنس اداروں کے حوالے سے بتایا ہے کہ حماس اس نیٹ ورک کو ’سائبر وار‘ اور مخالف انٹیلی جنس کارروائیوں کے واسطے استعمال میں لا رہی ہے۔ اس نیٹ ورک کا صدر مرکز استنبول میں ہے۔

اخبار کے مطابق ترکی میں حماس کے خفیہ ’سائبر بیس‘ نے دو سال قبل کام شروع کیا تھا۔ یہ پلیٹ فارم غزہ میں حماس کی عسکری قیادت کے زیر انتظام ہے۔ یہ ترکی میں حماس کے سرکاری دفاتر سے علاحدہ ہے۔

یورپی انٹیلی جنس اداروں نے ترکی میں حماس کے زیر انتظام ایک خفیہ مرکز کا پتہ چلایا تھا۔ اس کا مقصد ’سائبر وار‘ اور مخالف انٹیلی جنس کارروائیوں پر عمل درامد ہے۔

مغربی انٹیلی جنس ذرائع کے مطابق استنبول میں صدر مرکز بنیادی طور پر رابطہ کاری اور فنڈنگ کے امور سر انجام دیتا ہے۔ یہ شہر میں حماس تنظیم کے سرکاری دفاتر سے الگ تھلگ ہے اور غزہ میں تنظیم کی عسکری قیادت کی ہدایات پر کام کرتا ہے۔