.

شام: دمشق کے مفتی بم دھماکے میں ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام کے دارالحکومت دمشق اور اس اطراف کے علاقوں‌ کے سرکاری مفتی اور سرکردہ مذہبی رہ نما الشیخ محمد عدنان افیونی قدسیا کے مقام پر ایک بم دھماکے کے نتیجے میں‌ ہلاک ہوگئے۔

شام کی سرکاری نیوز ایجنسی نے 'ٹویٹر' پر پوسٹ کردہ ایک بیان میں بتایا کہ مفتی دیار دمشق کو نامعلوم دہشت گردوں نے دہشت گردی کا نشانہ بنایا۔ دہشت گردوں نے ان کی گاڑی میں بم نصب کیا تھا۔

لبنانی وزارت اوقاف نے مفتی دمشق علامہ افیونی کے قتل کی شدید مذمت کرتے ہوئے ان کے اہل خانہ سے ہمدردی کا اظہار کیا ہے۔

خیال رہے کہ علامہ افیونی شام کی علما اور فقہ کونسل کے سینیر رکن اور شام کے مرکز برائے انسداد دہشت گردی و مذہبی انتہا پسندی کے جنرل سپر وائزر تھے۔ انہیں سنہ 2013ء کو دمشق اور اس کے اطراف کےعلاقوں کا سرکاری مفتی تعینات کیا گیا تھا۔

الشیخ محمد عدنان افیونی کا شمار شامی صدر بشارالاسد کے مقربین میں ہوتا تھا۔ سیرین آبزر ویٹری کے مطابق دارالحکومت کے اطراف میں اپوزیشن گروپوں اور حکومت کے درمیان طے پانے والے معاہدوں کو کامیاب بنانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔