.

اسرائیلی کابینہ نے بحرین سے امن معاہدے کی منظوری دے دی، پارلیمان میں رائے شماری مؤخر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو کی کابینہ نے بحرین سے معمول کے تعلقات استوار کرنے کے لیے معاہدے کی منظوری دے دی ہے۔اب اسرائیلی پارلیمان اس کی توثیق کرے گی۔

بنیامین نیتن یاہو نے 15 ستمبر کو وائٹ ہاؤس میں بحرینی وزیرخارجہ عبداللطیف الزیانی کے ساتھ اس معاہدۂ ابراہیم پر دست خط کیے تھے۔اسرائیلی وزیر زاچی ہینجبی نے آرمی ریڈیو سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ کابینہ نے اتفاق رائے سے اس معاہدے کی منظوری دی ہے۔بحرین کی کابینہ پہلے ہی 19 اکتوبر کو اس کی منظوری دے چکی ہے۔

اسرائیلی پارلیمان کے ایک ترجمان نے کہا ہے کہ اس معاہدے پر رائے شماری کے لیے ابھی کوئی تاریخ مقرر نہیں کی گئی ہے۔واضح رہے کہ قبل ازیں اسرائیل اور یو اے ای اپنے دوطرفہ معاہدے کی منظوری دے چکے ہیں۔

اسرائیلی حکومت نے آج متحدہ عرب امارات کے ساتھ معمول کے تعلقات استوار کرنے کی بھی منظوری دے دی ہے۔اسرائیلی پارلیمان نے اسی ماہ اس معاہدے کی توثیق کی تھی۔

اسرائیلی وزیراعظم کے دفتر کے اعلان کے مطابق ایک اسرائیلی وفد آیندہ چند روز میں سوڈان کے ساتھ معمول کے تعلقات استوار کرنے کے لیے معاہدے کو حتمی شکل دینے کی غرض سے خرطوم کا دورہ کرے گا۔سوڈان گذشتہ دوماہ میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ طے کرنے والا تیسرا عرب ملک ہے۔