.

اسرائیل کا پہلا سرکاری وفدامن معاہدہ کو حتمی شکل دینے کے لیے سوڈان کا دورہ کرے گا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیل کا ایک اعلیٰ سرکاری وفد آیندہ چند روز میں سوڈان کے ساتھ معمول کے تعلقات استوار کرنے کے لیے امن معاہدے کو حتمی شکل دینے کی غرض سے خرطوم کا دورہ کرے گا۔

سوڈان اور اسرائیل نے جمعہ کو معمول کے دوطرفہ تعلقات استوار کرنے کا اعلان کیا تھا اور سوڈان تیسرا عرب ملک ہے جس نے گذشتہ دو ماہ میں اسرائیل کے ساتھ امن سمجھوتے کا اعلان کیا ہے۔اس سے پہلے گذشتہ ماہ متحدہ عرب امارات اور بحرین نے اسرائیل سے امن معاہدے طے کیے ہیں۔

یہ دونوں امن معاہدے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ثالثی میں طے پائے تھے اور انھوں ہی نے اسرائیل اور سوڈان کے درمیان تیسرے امن سمجھوتے کا اعلان کیا تھا۔انھوں نے سوڈان اور اسرائیل کے لیڈروں سے اس ضمن میں ٹیلی فون پر بات چیت کی تھی۔

اسرائیلی وزیراعظم کے دفتر نے اتوار کو جاری کردہ ایک بیان نے میں کہا ہے کہ بنیامین نیتن یاہو نے صدر ٹرمپ کا شکریہ ادا کیا ہے۔انھوں نے سوڈانی وزیراعظم عبداللہ حمدوک اور خود مختار کونسل کے چیئرمین جنرل عبدالفتاح البرہان کا بھی ان کے تاریخی فیصلے پرشکریہ ادا کیا ہے۔