.

آسٹریلوی شہریوں کی قطر میں "انتہائی تکلیف دہ" تلاشی کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

آسٹریلیا کی حکومت نے دوحہ ائیر پورٹ پر بے لباس تلاشی سکینڈل پر باضابطہ شدید تشویش کا اظہار کیا ہے۔

آسٹریلوی وزیر خارجہ مارائز پین نے اخبار نویسوں کو بتایا کہ ’’یہ انتہائی تکلیف دہ اور جارحانہ واقعات کا سلسلہ ہے‘‘۔ ’’میں اپنی زندگی میں ایسا کچھ ہوتے نہیں دیکھ سکتی۔ قطری حکام کو ہم نے اس ضمن میں اپنے خیالات سے دوٹوک الفاظ میں آگاہ کر دیا ہے۔‘‘

آسٹریلیا کو قطری حکام کی جانب سے رپورٹ کا انتظار ہے، جس کے بعد ہم اگلے اقدام کا تعین کریں گے۔

انھوں نے بتایا کہ قطر ہوائی اڈے پر پیش آنے والے واقعہ سے آسٹریلیا فیڈرل پولیس کا آگاہ کر دیا ہے۔ تاہم آسٹریلیا پولیس کیا اقدام اٹھا سکتی ہے، اس کے بارے میں کچھ نہیں بتایا گیا۔ پولیس نے اس معاملے پر تبصرے کی درخواست کا بھی کوئی جواب نہیں دیا۔

یاد رہے دوحہ کے حمد انٹرنیشنل ایئر پورٹ سے دو اکتوبر کو سڈنی جانے والی پرواز روانہ ہونے والی تھی لیکن حکام نے مبینہ طور پر ایئر پورٹ پر ایک مردہ نومولود کا پتہ لگنے کے بعد اس میں چار گھنٹے تاخیر کی۔

طیارے میں سوار تمام خواتین کو اترنے کا حکم دیا گیا تھا۔ طیارے میں موجود ایک ڈاکٹر نے گارجین آسٹریلیا کو بتایا ’خواتین کچھ دیر بعد واپس آئیں تو ان میں بیشتر پریشان تھیں‘۔

ڈاکٹر ولف گینگ بابیک نے کہا’ کم از کم ان میں سے ایک رو رہی تھی اور وہ تبادلہ خیال کر رہی تھیں کہ کیا ہوا ہے اور یہ ناقابل قبول اور ناگوار ہے‘۔

خواتین کے واپس آنے کے بعد طیارے نے پرواز کی۔ ڈاکٹر بابیک نے بتایا انہوں نے کچھ مسافروں سے بات کی جنہوں نے بتایا کہ’ انہیں ایئر پورٹ کے ایک پرائیوٹ ایریا میں لے جایا گیا‘۔

خواتین نے بتایا ’سیکیورٹی اہلکار انہیں ایک کمرے میں لے گئے۔ نہیں معلوم تھا کہ کیا ہونے جا رہا ہے اور پھر ایک لیڈی ڈاکٹر کے سامنے پیش کیا گیا جہاں بنیادی طور پربے لباس تلاشی لی گئی۔ تام کپڑے یہاں تک کے زیر جامہ بھی اتار دیا گیا‘۔

پھر لیڈی ڈاکٹر نے یہ معلوم کرنے کی کوشش کی کہ حال ہی میں کس نے بچے کو جنم دیا ہے۔ کسی نے بتایا تھا کہ ٹوائلٹ سے ایک نومولود ملا ہے اور یہ جاننے کی کوشش کی جا رہی ہے کہ اس کی ماں کون ہے؟

دیگر اطلاعات کے مطابق یہ معائنہ رن وے پر ایک ایمبولینس میں ہوا تھا اور تیرہ آسٹریلوی خواتین کی بے لباس تلاشی لی گئی۔

آسٹریلوی محکمہ برائے امور خارجہ اور تجارت( ڈی ایف اے ٹی ) کے ترجمان نے گارجین آسٹریلیا کو بتایا’ قطر ائیر ویز کی سڈنی جانے والی پرواز میں مسافروں سے روا سلوک سے متعلق رپورٹوں سے آگاہ ہیں۔ قطری حکام اور قطر ائیر ویز سے مزید معلومات حاصل کر رہے ہیں‘۔