.

مصر: والدین کی مجرمانہ غلفت سے شیرخوار بچہ گھرپر بھوک سے ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

مصر میں ایک شیرخوار بچے کی اس کے والدین کی مجرمانہ لاپرواہی اور غفلت کے نتیجے میں‌ ہونے والی موت نے عوام میں سخت غم وغصہ کی لہر دوڑا دی ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق مصر کی القلیوبیہ گورنری میں پولیس کو بتایا گیا کہ ایک گھر میں چار ماہ کے ایک بچے کو مردہ پایا گیا ہے۔ یہ شکایت بچے کے والد کی طرف سے کرائی گئی جس میں اس نے بچے کی موت کی ذمہ داری اپنی بیوی جو بچے کی ماں بھی ہے پرعاید کی۔

تفصیلات کے مطابق درخواست گذار نے بتایا کہ 17 اکتوبر کو اس کی گھر پربیوی کے ساتھ کسی بات پر تلخ کلامی ہوئی تاہم بیوی بڑے بیٹے مروان کو ساتھ لے کر گھر سے یہ کہہ کر گئی کہ وہ کچھ سامان خریدنے کے لیے بازار جا رہی ہے تاہم وہ بازار جانے کے بجائے اپنے والدین کے گھر چلی گئی مگر اس نے بتایا نہیں۔ اس نے مزید بتایا کہ وہ بیوی کے واپس آنے کا انتظار کرتا رہا مگر اس کی آمد میں کافی تاخیر ہوگئی اور وہ گھر کا دروازہ کھلا چھوڑ کر چلا گیا۔ بیوی کے ساتھ ناچاقی کی وجہ سے وہ بھی 9 دن واپس نہیں آیا۔ نو دن کے بعد واپس گھر پہنچا تو اس کا بچہ بھوک سے مر چکا تھا مگر بیوی واپس نہیں آئی تھی۔

پولیس نے جائے وقوعہ پر پہنچ کراس حوالے سے مزید تحقیقات کی ہیں تاہم بچے کے والد کی طرف سے دی گئی درخواست میں اس کا موقف غلط سامنے آیا ہے۔ اگرچہ اس نے بیوی سے ناچاقی کا تذکرہ کیا ہے تاہم دونوں میں شدید اختلافات کے باعث بچے کی موت کے دونوں قصور وار قرار دیے جا سکتے ہیں۔

پولیس نے قانون کے مطابق واقعے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔