.

معتمرین کی نقل وحمل کے لیے ٹرانسپورٹ کا ان ہدایات پر عمل کرنا لازمی قرار

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عمرہ مناسک کی بہ تدریج بحالی کے تیسرے مرحلے کے قریب آتے ہی سعودی عرب کی وزارت حج وعمرہ نے بیرون ملک سے آنے والے عمرہ زائرین کی مکہ معظمہ میں‌ بسوں میں سفر کے حوالے سے ضوابط اور سفری شرائط کی تفصیلات جاری کی ہیں۔

العربیہ کے نامہ نگار کے مطابق سعودی عرب کی پبلک ٹرانسپورٹ نے وزارت صحت کی طرف سے وضع کردہ طریقہ کار کو یقینی بنانے اور بیرون ملک سے آنے والے معتمرین کی صحت وسلامتی کے لیے خصوصی ہدایات جاری کی ہیں۔ ان ہدایات پر ٹرانسپورٹ انتظامیہ اور عازمین عمرہ سب کو عمل درآمد کرنا ہوگا۔

اس ضمن میں حکومت کی طرف سے واضح‌ کیا گیا ہے کہ عازمین عمرہ کو مکہ معظمہ میں ٹرانسپورٹ کی سہولت فراہم کرنے والی بسوں کا ماڈل پانچ سال سے زیادہ پرانا نہیں ہونا چاہیے۔ تمام بسوں میں‌ خودکار ٹریکنگ سسٹم نصب ہو، تمام بسوں کے پاس ان کا روٹ پرمٹ موجود ہو۔ ڈرائیور اور اس کے معاون کے پاس لائسنس سمیت تمام ضروری کوائف موجود ہوں، ڈرائیور ایک دن میں 8 گھنٹے سے زیادہ گاڑی نہ چلانے کی پابندی کرے۔ اس کے علاوہ وزارت حج وعمرہ کی طرف سے عازمین عمرہ کے لیے جاری کردہ ضروری ہدایات پرعمل درآمد کو یقینی بنایا جائے۔

تمام بسوں کے عقبی حصے پر ان کے روٹ کی وضاحت کی جائے اور اس بس میں سوار ہونے والے عمرہ زائرین کی فہرست کا ریکارڈ رکھا جائے۔ بس ڈرائیور اور کنڈکٹر کا نام اس فہرست میں شامل کیا جائے۔ زائرین کو بس میں سوار کرنے سے قبل بسوں کے اندر جراثیم کش اسپرے یقنی بنایا جائے اور وزارت صحت کی طرف سے ٹرانسپورٹ کے حوالے سے وضع کردہ ایس اوپیز اور 50 فی صد سواریوں کی جگہ خالی چھوڑنے کے اصول پرعمل درآمد کیا جائے۔

وزارت حج کا کہنا ہے کہ ان ضروری ہدایات پرعمل درآمد کرانے کا مقصد عمرہ ادائی کے لیے آنے والے معتمرین کی صحت اور ان کی وبا سے حفاظت کو یقینی بنانے میں ان کی مدد کرنا اور عمرہ کے موقع پر اللہ کے مہمانوں کو مثالی سہولیات فراہم کرنا ہے۔

ادھر مکہ المکرمہ کی انتظامیہ نے مسجد حرام کے قریب مسافروں کی چھان بین کے لیے 12 کنٹرول پوائنٹس قائم کیے ہیں۔ ان پوائنٹس کے قیام کا مقصد مکہ معظمہ کے مختلف روٹس سے مسجد حرام کی طرف آنے والے عمرہ زائرین اور نمازیوں کے حوالے سے صحت کے ایس اوپیز پرعمل درآمد کرانا اور اس بات کو یقینی بنانا کہ مجاز عمرہ زائرین کے علاوہ کوئی غیر متعلقہ شخص حرم مکی میں داخل نہ ہونے پائے۔ اسی ضرورت کے پیش نظر حکومت نے مکہ معظمہ کے مختلف اسٹیشنوں سے عمرہ زائرین کو لانے کے لیے بسیں مختص کی ہیں۔