.

سعودی عرب : اینٹی کرپشن اتھارٹی کا "ھدف" فنڈ میں مالی خرد برد کا انکشاف

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں کنٹرول اینڈ اینٹی کرپشن اتھارٹی "نزاھہ" کے ایک ذمے دار ذریعے نے بتایا ہے کہ اتھارٹی کو ہیومن ریسورسز ڈیولپمنٹ فنڈ "هدف" کی جانب سے یہ اطلاع موصول ہوئی تھی کہ فنڈ میں تجارتی اداروں کی سپورٹ کے ایک پروگرام میں مالی بے ضابطگی کا انکشاف ہوا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سابقہ طور پر جاری احکامات کو جن پر عمل درامد ہو چکا تھا ،،، دوبارہ استعمال کرتے ہوئے مالی رقوم کو ایک شہری کی ملکیت میں موجود تجارتی اداروں کے بینک کھاتوں میں منتقل کیا گیا۔

اتھارٹی نے فوری طور پر اپنی تحقیقات مکمل کیں۔ اس کے نتیجے میں ثابت ہو گیا کہ یہ شہری مذکورہ مالی سپورٹ کا استحقاق نہیں رکھتا تھا۔ اس سلسلے میں حاصل کی گئی مجموعی رقم 39806991 (تقریبا 4 کروڑ) ریال تک جا پہنچی۔

سعودی سرکاری خبر رساں ایجنسی "SPA" کے مطابق سعودی شہری نے برقی طور پر استعمال ہونے والے نظام میں موجود تکنیکی کمزوری سے فائدہ اٹھاتے ہوئے "ھدف" پروگرام کی ویب سائٹ کو ہیک کیا۔ اس نے نئے USER کو فعّال بناتے ہوئے سابقہ احکامات میں ترمیم کرتے ہوئے بینک کھاتوں کے نئے نمبروں کو داخل کر کے اپنے تجارتی اداروں کے لیے مالی رقوم کا حصول یقینی بنا لیا۔ اس طرح 2018ء سے 2020ء کی مدت کے دوران (39806991) سعودی ریال منتقل کیے گئے۔

ملزم نے فنڈ کے پروگرام کے حوالے سے استعمال ہونے والے نظام میں موجود تکنیکی کمزوری کا اعتراف کیا اور بتایا کہ اس طرح سے مالی رقوم کو منتقل کیا جا سکتا ہے۔

سعودی اتھارٹی "نزاھہ" نے باور کرایا ہے کہ سرکاری مال ہتھیانے والے یا ذاتی مفاد کی خاطر منصب سے ناجائز فائدہ اٹھانے والے ہر شخص کا تعاقب جاری ہے۔ اس سلسلے میں حکومت کی جانب سے مؤثر اور جدید پالیسیاں مرتب کی جا رہی ہیں اور ان پر عمل درامد بھی کیا جا رہا ہے۔

اتھارٹی نے بدعنوانی سے متعلق امور کی اطلاع دینے کے سلسلے میں شہریوں اور مقیم غیر ملکیوں کے تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ اس حوالے سے اتھارٹی نے خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان کی جانب سے لا محدود سپورٹ پر بھی خصوصی ممنونیت کا اظہار کیا۔ اس سپورٹ کے نتیجے میں اتھارٹی مالی اور انتظامی نوعیت کی تمام تر بدعنوانیوں کے انسداد کے لیے اپنی ذمے داریاں انجام دینے میں کامیاب ہو رہی ہے۔