لیرہ کی قدر میں ریکارڈ کمی، ایردوآن نے مرکزی بینک کے گورنر کو فارغ کر دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

ترکی میں صدر رجب طیب ایردوآن نے مرکزی بینک کے گورنر مراد اویسال کو منصب سے ہٹا کر ان کی جگہ سابق وزیر مالیات ناجی اقبال کو مقرر کر دیا ہے۔ یہ پیش رفت ترک کرنسی لیرہ کی قدر میں ریکارڈ کمی کے بعد سامنے آئی ہے۔

اس اقدام کا اعلان ایک صدارتی حکم نامے میں کیا گیا جو سرکاری جریدے میں شائع ہوا ہے۔

جمعے کے روز ترک لیرہ امریکی ڈالر کے مقابل 8.58 کی ریکارڈ سطح تک نیچے آ کر 8.5445 کی سطح پر بند ہوا۔ رواں سال ڈالر کے مقابلے میں لیرہ کی قدر میں 30% تک کمی واقع ہو چکی ہے۔

مراد اویسال کو جولائی 2019ء میں ترکی کے مرکزی بینک کا گورنر بنایا گیا تھا۔

ناجی اقبال 2015ء سے 2018ء تک ترکی کے وزیر مالیات رہ چکے ہیں۔

کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی Fitch کے ایک سینئر تجزیہ کار کے مطابق ترکی نے اپنی پالیسی کو اتنا سخت نہیں بنایا جو لیرہ کو سہارا دینے کے لیے کافی ہوتی۔ انہوں نے واضح کیا کہ ملک کے لیے غیر ملکی زر مبادلہ اور بیرونی فنڈنگ ابھی تک کمزوری کے نقاط ہیں۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں