.

شام میں‌‌ ایرانی ملیشیا پر خفیہ حملے کے بعد اسرائیلی فوج وادی گولان میں‌ ہائی الرٹ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

شام میں اسرائیلی فوج کی جانب سے ایرانی قدس فورس اور شامی رجیم کے دستوں پر علی الصبح خفیہ فضائی حملے کےبعد مقبوضہ وادی گولان میں اسرائیلی فوج کو الرٹ کردیا گیا ہے۔

بدھ کے روز العربیہ کے نمائندے نے اطلاع دی کہ اسرائیل نے شمالی سرحد پروادی گولان میں متعدد آئرن ڈوم بیٹریاں نصب کی ہیں تاکہ شام کے اندر سے کسی بھی راکٹ حملے کا بروقت سد باب کیا جا سکے۔

اسرائیلی فوج نے اس سے قبل اعلان کیا تھا کہ اسرائیلی جنگی طیاروں نے رات گئے شام میں ایران سے منسلک اہداف پر بمباری کی اور ایرانی پاسداران انقلاب کے سمندر پار آپریشنل گروپ 'قدس فورس' کے ٹھکانوں پر بم باری کی گئی۔ اس کے بعد وادی گولان میں تعینات فوج کو چوکس کردیا گیا ہے۔ اسرائیلی بارڈر فورسز نے دعویٰ‌کیا ہے کہ اس نے شام کی سرحد کے قریب نصب کردہ ایک بم ناکارہ بنا دیا۔ اسرائیلی حکام کے مطابق یہ بم شام میں موجود ایک ایرانی سیل نے نصب کیا تھا۔

انہوں نے واضح کیا کہ بمباری سے شام کے اینٹی ایرکرافٹ میزائل بیٹریوں کے علاوہ اسٹوریج کی سہولیات ، ہیڈ کوارٹر اور فوجی کمپلیکس" بھی نشانہ بنے۔

بعدازاں اسرائیلی فوج کے ترجمان جوناتھن کونرکس نے انکشاف کیا کہ حملوں سے دمشق ہوائی اڈے پر ایرانی فوجی ہیڈ کوارٹر کو نشانہ بنایا گیا۔ اسرائیلی ترجمان کے مطابق دمشق ہوائی اڈے پر جس مرکز کو نشانہ بنایا گیا وہاں پر ایران سے آنے والے عسکری لیڈروں کی میزبانی کی جاتی ہے اور اسے شامی فوج کے ساتویں ڈویژن کے ہیڈ کواٹر کے طور پر بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

ادھرشامی حکومت میڈیا نےبتایا ہے کہ دمشق میں ہونے والے فضائی حملوں‌ میں تین فوجی ہلاک اور ایک زخمی ہوا ہے جب کہ عسکری تنصیبات کو بھاری مادی نقصان بھی پہنچا ہے۔ شام میں انسانی حقوق کے لیے کام کرنے والے گروپ سیرین آبزر ویٹری کے مطابق اسرائیلی حملے میں ہلاکتوں کی تعداد 10 تک پہنچ گئی ہے۔