سلامتی کونسل حوثیوں کے حملے روکنے کے لیے کردار ادا کرے: سعودی عرب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب نے سلامتی کونسل سے کہا ہے کہ گذشتہ سوموار کے روز جدہ میں ایک پٹرول اسٹیشن پر ہونے والے حملے کے پیچھے یمن کے ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغیوں کا ہاتھ ہے۔ سعودی عرب نے سلامتی کونسل سے مملکت پرحملے روکنے کے لیے حوثیوں پر دباو ڈالنے کا بھی مطالبہ کیا۔

العربیہ کے مطابق سلامتی کونسل میں سعودی عرب کے خصوصی مندوب عبداللہ المعلمی نے کونسل کے 15 رکن ممالک کو مکتوب ارسال کیے ہیں جن میں سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر حالیہ حملوں کے حوالے سے حوثی باغیوں کو قصور ٹھہرایا گیا ہے۔

مکتوب کہا گیا ہے کہ مملکت میں تیل کی تنصیبات پر حملوں میں حوثی ملوث ہیں۔ حوثیوں کے حملوں سے نہ صرف سعودی عرب کی قومی سلامتی کو نقصان پہنچ رہا ہے بلکہ ان سے عالمی توانائی کے مراکز کو نقصان پہنچ رہا ہے۔ حوثیوں نے یمن کے ساتھ سعودی عرب اور دوسرے ممالک کی قومی سلامتی بھی داو پر لگا دی ہے۔

سعودی سفیر نے کہا کہ جدہ میں سوموار کے روز ہونے والے حملے کے پیچھے ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا کا ہاتھ ہے۔

انہوں نے کہا کہ مملکت حوثی دہشت گردوں کو مملکت کی سلامتی کو نقصان پہنچانے کی ہرگز اجازت نہیں دے گی۔

ادھر سعودی عرب کی وزارت پٹرولیم کے ایک ذریعے 'العربیہ' چینل سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ جدہ میں تیل کی تنصیب پر حملے میں زیادہ نقصان نہیں ہوا تاہم کچھ دیر کے لیےتیل کی ترسیل روک دی گئی تھی۔

مقبول خبریں اہم خبریں