حوثی باغیوں‌ کے ہاتھوں مغربی یمن میں نہتے شہریوں کا قتل عام

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

یمن میں ایرانی حمایت یافتہ حوثی ملیشیا نے مغربی گورنری الحدیدہ میں الدریھمی ڈاریکٹوریٹ کے نواحی علاقے القازہ میں ایک وحشیانہ کارروائی کے دوران کم سے کم سات عام شہریوں کو موت کے گھاٹ اتار دیا جب کہ اس کارروائی میں بچوں سمیت 10 افراد زخمی ہوئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق الدریھمی اسپتال کے ایک ذرائع نے بتایا کہ حوثی باغیوں نے القازہ گائوں پر توپخانے شدید گولہ باری کی جس کے نتیجے میں بچوں اور خواتین سمیت کم سے کم 7 شہری جاں‌بحق اور 10 زخمی ہوگئے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اسپتال لائے گئے بعض زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے جس کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد میں اضافے کا خدشہ ہے۔ زخمیوں کو بین الاقوامی طبی ادارے 'اطبا بلا حدود' کے اسپتال منتقل کیا گیا ہے جہاں ان کا علاج جاری ہے۔

یمن کی جوائنٹ فورسز کے شعبہ اطلاعات کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں جاں بحق اور زخمی ہونے والے شہرویوں کی شناخت جاری کی گئی ہے۔ ان کی شناخت منیٰ عثمان حسن عمر، جمعہ محمد مر علی، امیمہ عایش عمر علی، میمونہ عمر علی، ھاجر محمد عمر، محمد عمر علی، محمد فواد، عرفات فواد، راشد عمر منی فواد اور عدنان فواد کے ناموں سے کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ چند روز قبل التحتیا الخوخہ کے مقام پر حوثیوں کے نصب کردہ ایک بم دھماکے کے نتیجے میں کم سے کم چھ شہری جاں بحق اور چھ زخمی ہوگئے تھے۔

مقبول خبریں اہم خبریں