.

سعودی عرب کی مساعی سے 2027ء‌ کو کھجوروں کا عالمی سال قراردینے کا فیصلہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی مساعی سے اقوام متحدہ کی فوڈ اینڈ ایگریکلچرل آرگنائزیشن (ایف اے او) نے سال 2027ء کو کھجور کا عالمی سال قرار دینے پر اتفاق کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق کونسل کے 30 نومبر سے 4 دسمبر 2020 ء تک ہونے والے 165 ویں سالانہ اجلاس کے دوران 'سی اے اے جی' کمیٹی کی سفارشات کی منظوری دی۔ ان سفارشات میں سعودی عرب کی کوشش سے سال 2027 کو کھجور کا عالمی سال منانے پر اتفاق کیا گیا۔ تاہم حتمی منظوری کے لیے اسے جنرل اسمبلی کے اجلاس میں‌ پیش کیا جائے گا۔

روم میں سعودی عرب کے مستقل مندوب ڈاکٹر محمد بن احمد الغامدی نے فوڈ اینڈ ایگریکلچرل آرگنائزیشن کی ورک کونسل میں شرکت کی۔

سعودی وزارت ماحولیات ، پانی اور زراعت نے ایک بیان میں کھجوروں کا عالمی سال منانے اعلان کو اہم پیش رفت قرار یا ہے۔ بیان میں‌کہا گیا ہے کہ کھجور کا عالمی عالم منانے کا مقصد کھجوروں کی افزائش، پیداوار، معیار اور کھجور کی تجارت کے حوالے سے کوششوں کو مزید موثر بنانا ہے۔

اقوام متحدہ کی فوڈ اینڈ ایگریکلچرل آرگنائزیشن کونسل کی منظور کے بعد 2027ء کو کھجور کا عالمی سال منانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
کونسل نے لاکھوں دیہی زرعی خاندانوں اور چھوٹے مالکان خاص طور پر مشرق وسطی اور شمالی افریقہ میں بسنے والے کاشت کاروں معاشی فوائد اور پائیدار زرعی پیداواری طریقوں کی اہمیت کے بارے میں شعور اجاگر کرنے ، منڈیوں کی حوصلہ افزائی کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔

فوڈ اینڈ ایگریکلچرل آرگنائزیشن کے اعدادوشمار کے مطابق عالمی سطح پر کھجور کی پیداوار 10 لاکھ ہیکٹر سے زیادہ رقبے پر محیط ہے اور اس کی مجموعی پیداوار تقریبا 8.5 ملین میٹرک ٹن ہ۔ اس کی کاشت ایشیا سے افریقا تک پھیلی ہوئی ہے۔ افریقہ میں 435.7 ہزار ہیکٹر ، یوروپ میں 947 ہیکٹر ، اور امریکا میں 7022 ہیکٹر جبکہ ایشیا اور افریقہ دنیا کی کل پیداوار کے بالترتیب 8.55 فی صد اور 4.43 فی صد کے ساتھ پیدا کرنے والے دو سب سے بڑے خطے قرار دیے جاتے ہیں۔