.

حماس: غزہ میں اسرائیلی فوج کے بچّوں کے اسپتال پر’وحشیانہ‘ حملے کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

غزہ کی حکمراں حماس نے اسرائیلی فوج کے بچّوں کے اسپتال پر’وحشیانہ ‘فضائی حملے کی مذمت کی ہے۔اس حملے میں اسپتال کو شدید نقصان پہنچا ہے جبکہ اسرائیل کا کہنا ہے کہ اس نے یہ فضائی بمباری راکٹ حملے کے جواب میں کی ہے۔

اسرائیلی فوج نے دعویٰ کیا ہے کہ اس نے حماس کے تین اہداف کوفضائی حملے میں نشانہ بنایا ہے۔ان میں ایک راکٹ تیار کرنے کی فیکٹری تھی،ایک زیر زمین تنصیب تھی اور ایک فوجی چوکی تھی۔

لیکن حماس نے اسرائیلی فوج کے اس دعوے کو مسترد کردیا ہے اور کہا ہے کہ ’’وحشیانہ‘‘ فضائی حملے میں بچّوں کے اسپتال اور خصوصی افراد کے مرکزکو نقصان پہنچا ہے۔

غزہ میں میڈیکل ذرائع کا کہنا ہے کہ اس فضائی حملے میں ایک بچّے سمیت دو افراد معمولی زخمی ہوگئے ہیں۔

قبل ازیں جمعہ کی شب اسرائیل کے جنوبی شہر عسقلان اور غزہ کی پٹی کے نواح میں راکٹ گرنے کے بعد خطرے کے سائرن بجائے گئے تھے۔اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ ’’غزہ کی پٹی سے اسرائیلی علاقے کی جانب دو راکٹ فائر کیے گئے تھے۔ان سے کوئی جانی اور مالی نقصان نہیں ہوا تھا۔

تاہم اسرائیل کی ایمرجنسی میڈیکل سروسز کا کہنا ہے کہ راکٹ گرنے کے بعد متعدد افرادصدمے سے دوچار ہوگئے تھے اور ان کا علاج کیا جارہا تھا۔واضح رہے کہ اس سے پہلے گذشتہ ماہ غزہ کی پٹی سے اسرائیل کی جانب ایک راکٹ داغا گیا تھا۔