.

سعودی عرب کے بحیرہ اصفر میں موسم سرما کے رنگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی الاحسا گورنری میں واقع بحیرہ اصفر کو سیاحت کے اعتبار سے ایک اہم مقام کا درجہ حاصل ہے۔ یہی وجہ ہے کہ سعودی عرب کے محکمہ سیاحت نے 'موسم سرما' کے سیاحتی سیزن میں جن 17 مقامات کو سیاحو‌ں کے لیے مختص کیا ہے، ان میں بحیرہ الاصفر بھی شامل ہے۔ سعودی عرب کی ٹور رزم اتھارٹی کی طرف سے موسم سما میں 200 سیاحتی کمپنیوں کے ذریعے رواں موسم سرما میں 300 سے زیادہ سیاحتی تجربات کیے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق سعودی عرب میں‌بحیرہ اصفر کو اس کی قدرتی خوبصورتی کی وجہ سے خاص شہرت حاصل ہے۔ یہ ایک قدرتی سیر گاہ ہے جو 326 ملین مربع میٹر رقبے پر پھیلی ہوئی ہے۔ الاحسا گورنری کے اس سرسبز وشاداب علاقے کو اقوام متحدہ کے ادارہ برائے سائنس وثقافت 'یونیسکو' نے بھی خوبصورت قدرتی مقامات میں شامل کر رکھا ہے۔ یہ علاقہ قدرتی حسن سے مالا مال ہونے کے ساتھ ساتھ اپنے اندر ثقافتی اور آثار قدیمہ کے خزانے بھی محفوظ کیے ہوئے ہے۔ یہاں کا موسم پورا سال سیاحوں کے لیے پرکشش رہتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بہار ہو کے خزاں، گرمیاں ہوں یا سردیاں ہر سیزن میں‌لوگ یہاں سیاحت اور پکنک منانے آتے ہیں۔

سعودی عرب کی پریس ایجنسی 'ایس پی اے' کے مطابق بحیرہ اصفر کا قدرتی جمالیات حسن اپنی مثال آپ ہے۔ اس کے اطراف میں سرسبز زمین کا ایک وسیع رقبہ موجود ہے جس میں انواع اقسام کے درخت اور صحرائی جڑی بوٹیاں پائی جاتی ہیں۔ یہ علاقہ مقامی اور ھجرت کرکے آنے والے پرندوں کا بھی مسکن ہے۔ یہاں پر مقامی سیاحت کےساتھ ساتھ الاحسا سے باہر سے آنے والے سیاحوں کی بڑی تعداد موجود رہتی ہے۔

بحیرہ اصفر کی سیاحت کے لیے ملک بھر سے لوگ گروپوں، انفرادی شکل اور خاندانوں کے ساتھ آتے ہیں۔ یہاں پر کئی اقسام کی مچھلیاں سیاحوں کی پسندیدہ قرار دی جاتی ہیں۔ یہ علاقہ فوٹو گرافی کے لیے بھی بہت اہم ہے اور فوٹو گرافی کے شوقین حضرات اپنا یہ شوق پورا کرنے کے لیے اس کے مناظر کو کیمروں میں محفوظ کرتے رہتے ہیں۔ یہاں پر غروب اور طلوع آفتاب کے مناطر فوٹو گرافروں کے لیے بہت اہم ہوتے ہیں۔