.

روس سے مل کر شام سے ایران کو بے دخل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں: نیتن یاھو

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسرائیلی وزیر اعظم بنجمن نیتن یاھو نے کہا ہے کہ ان کا ملک شام کے شمالی علاقوں میں ایران کو پائوں جمانے سے روکنے کے لیے روس کے ساتھ مل کر کام کررہا ہے۔

نیتن یاہو نے مزید کہا کہ روسی صدر کے ساتھ میرے تعلقات اس لیے اہم ہیں کہ وہ ہمیں عمل کی آزادی کو محفوظ رکھنے میں مدد کرتے ہیں جس کی ہمیں اپنی شمالی سرحدوں پر ایران کو پائوں جمانے سے روکنے کی ضرورت ہے۔

یہ بات اسرائیل کے وزیر اعظم بنجمن نیتن یاھو نے اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر روسی بولنے والے اسرائیلیوں کو نئے سال کی مبارکباد دینے کے لیے پوسٹ کی گئی ایک ٹویٹ میں کہی۔ انہوں‌ نے روسی صدر ولادی میر پوتین کے ساتھ تعلقات کی اہمیت پر زور دیا اور کہا کہ دونوں ملک شام میں ایران کو پائوں مضبوط کرنے سے روکنے کے کام کر رہے ہیں۔

اسرائیلی وزیر اعظم نے مزید کہا کہ اسرائیل کے سابقہ سوویت یونین کے تمام ممالک کے ساتھ بہت اچھے تعلقات ہیں۔

انہوں نے کہا کہ میں ذاتی طور پر تمام رہ نماؤں کے ساتھ مستقل بات چیت کرتا ہوں۔ سب سے پہلے روسی صدر پوتین اور یوکرائن کے صدر کے ساتھ ہر چند ہفتوں یا مہینوں میں بات چیت کرتا ہوں۔ یہ تعلقات آپ میں سے بہت سے لوگوں کے لیے بہت اہم ہیں کیونکہ وہاں ’دوست‘ اور ’رشتے‘ دار موجود ہیں۔

اس کے علاوہ نیتن یاھو نے کہا کہ روس کے ساتھ تعلقات اسرائیل کے تمام شہریوں کے لیے بھی اہم ہیں۔ کیونکہ وہ خطے کے استحکام اور ہماری ریاست کی خوشحالی میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔