.

ہاتھی والی چٹان : سعودی عرب کے علاقے العُلا میں واقع ارضیاتی عجوبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کے علاقے العُلا میں سنہری صحرائی ریت میں واقع "جبل الفیل" (ہاتھی والی چٹان) ابھی تک عالمی سطح پر ایک ارضیاتی عجوبے کے طور پر جانی جاتی ہے۔ یہ مشہور چٹان ہاتھی کے جسم اور سُونڈ کی تصویر پیش کرتی ہے۔

تاریخی مقامات اور قدرتی جمالیات کو اپنے کیمرے کی آنکھ میں محفوظ کرنے والے سعودی فوٹوگرافر "محمد الشريف" نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ "اس قدرتی ڈھانچے کا جمال اطراف میں موجود ماحول کے سحر سے بھرپور ہے۔ اس میں نرم سمندری ریت اور حیران کر دینے والی دل چسپ شکلوں کی خمیدہ چٹانیں شامل ہیں"۔

الشریف نے واضح کیا کہ جبل الفیل ایک ضخیم چٹان ہے جس کی زمین سے اونچائی 50 میٹر ہے۔ یہ ہاتھی سے مشابہت رکھنے کے سبب خصوصی امتیاز رکھتی ہے۔ اس چٹان کے اطراف پہاڑیوں کا ایک مجموعہ ہے۔ یہ مدینہ منورہ صوبے کے ضلع العُلا سے 7 کلو میٹر مشرق میں واقع ہے۔ وقت گزرنے کے ساتھ تند و تیز ہوا اور دیگر ماحولیاتی عوامل نے چٹان کو اس طرح بنا دیا کہ وہ ایک "بڑے ہاتھی" کی شکل کے طور پر مسجم بن گئی۔ قدیم دور سے ہی یہ چٹان "جبل الفیل" کے نام سے جانی جاتی ہے۔ چٹان کا یہ نام کب سے پڑا ، اس بارے میں کوئی تاریخی معلومات نہیں ملتی۔