.

سعودی آرٹسٹ کی پیالیوں پر فن پاروں کی سوشل میڈیا پر دھوم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایک مقامی سعودی آرٹسٹ نے چائے کی پیالیوں پر موسم سرما کی نسبت سے فن پارے تیار کیے تو سوشل میڈیا پران کی تصاویر کی دھوم مچ گئی۔ سعودی آرٹسٹ کو بھی اندازہ نہیں تھا کہ اس کے یہ فن پارے اتنی تیزی کے ساتھ سوشل میڈٰا پر مقبول ہوسکتے ہیں۔

سعودی آرٹسٹ نورہ عبداللہ القمیزی نے چائے کی پیالیوں پر اگرچہ عربی میں الفاط کے ساتھ تصاویر بنائیں جو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئیں مگر انہیں ہرجگہ دیکھنے والوں نے بے حد پسند کرتے ہوئے نورہ کی فن کارانہ مہارت کو داد پیش کی ہے۔ پیالیوں پر لکھے گئے اس کے الفاظ کچھ اس طرح تھے"رات سرد ہو رہی ہے اور میری خواہشیں تیز ہو رہی ہیں"۔ "بردان دلوں کو توڑ دیتے ہیں"۔ اس نےسردیوں‌کی عکاسی کرنے والے جملوں‌کے ساتھ پیالیوں پر سردیوں کی مناسبت سے تصاویر بھی پینٹ کیں۔ ان میں کوٹ، چائے کی کیتلی، ہیتر اور دیگر اشیا شامل ہیں۔

نورہ القمیزی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ مجھے بچپن سے ڈرائنگ پسند تھی لیکن میں اپنی صلاحیتوں کو بڑھانا پسند نہیں کرتی تھی۔ میں نے گھر قرنطینہ کے ایام میں اس پر توجہ دینا شروع کی تھی۔ میں نے بصری صلاحیت کے ذریعہ ڈرائنگ سیکھنا شروع کی میں‌ نے انٹرنیٹ پر ڈرائنگ کی ویڈیوز دیکھیں اور ان کی مشق کرنے لگی۔

اس نے مزید کہا کہ میں نے پہلی ڈرائنگ ایک کارٹون کی بنائی۔ میری فیملی اور دوستوں کی طرف سے اس کی تعریف کی گئی جس نے مجھے ڈرائنگ میں مزید حوصلہ دیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ میں نے اپنی ڈرائنگ کو سوشل میڈیا پر ڈالنا شروع کیا۔ فالور اور مصوروں کی طرف سے خوب پذیرائی حاصل ہوئی۔

نوری القمیزی نے بتایا کہ میں نے پینٹنگز تیار کیں اور انہیں ایک کیفے میں ڈسپلے کیا۔ اس کے مالکان اور زائرین کی طرف سے خوب داد ملی۔ اس کے بعد میں نے ایک خاندان ایک پارٹی کے موقع پر مگوں کی تصویر کشی کا تجربہ کرنا شروع کیا۔ میں نے مگوں کی تصاویر سوشل میڈیا پر پوسٹ کیں اور بڑے پیمانے پر پذیرائی حاصل کی۔