.

فلسطینی صدرعباس کی مصراوراردن کے انٹیلی جنس چیفس کوانتخابی منصوبہ سے متعلق بریفنگ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فسلطینی صدر محمودعباس سے اتوار کے روز غربِ اردن کے شہر رام اللہ میں مصر اور اردن کے انٹیلی جنس سربراہوں نے ملاقات کی ہے۔میزبان صدر نے انھیں فلسطینی علاقوں میں 14 سال کے بعد انتخابات منعقد کرانے کے منصوبے سے آگاہ کیا ہے۔

فلسطینی صدر نے جمعہ کو ایک فرمان جاری کیا تھا۔اس کے تحت فلسطینی علاقوں میں مئی میں پارلیمانی اور جولائی میں صدارتی انتخابات کرانے کا اعلان کیا گیا ہے۔ان کی حریف جماعت اورغزہ کی پٹی کی حکمراں حماس نے انتخابات کے لیے ان کے فرمان کا خیرمقدم کیا ہے۔

مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں نئے انتخابات کے انعقاد سے حماس اور فلسطینی صدر کی جماعت فتح کے درمیان مصالحت کی راہ ہموار ہوسکتی ہے۔فتح کی قیادت میں فلسطینی اتھارٹی کا غربِ اردن میں کنٹرول ہے۔

فلسطینی صدر کے دفتر نے ایک بیان میں کہا ہے کہ مصری اور اردنی وفود کو فلسطینی ایشو سے متعلق ہونے والی تازہ پیش رفت بالخصوص مصالحتی امور کے بارے میں آگاہ کیا گیا ہے اور دونوں پڑوسی ملکوں کا اس ضمن میں مصالحانہ کردار پر شکریہ ادا کیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ اردن کے ساتھ مقبوضہ مغربی کنارے کا علاقہ واقع ہےجبکہ مصر غزہ کی پٹی کے ساتھ واقع ہے۔

دونوں متحارب فلسطینی جماعتوں کے لیڈروں کے درمیان آیندہ ہفتے مصر میں ملاقات ہوگی۔توقع ہے کہ دونوں جماعتیں انتخابات کے لیے مہم کے آغاز سے قبل اپنے اختلافات کے خاتمے کی کوشش کریں گی۔