سعودی عرب شہر فیفاء کا کیلا، منفرد خوشبو اور ذائقے کا مرکب

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

سعودی عرب کے جنوب مغربی صوبے جازان کا علاقہ فیفاء اپنی سرسبز زرعی زمین، پھلوں اور دیگر اشیاء کی کاشت کے حوالے سے مشہور ہے۔

علاقے کے لوگ سارا سال کاشت کاری سے مستفید ہوتے رہتے ہیں۔ زرعی انجینئر محمد الفیفی نے العربیہ ڈاٹ نیٹ سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ "کیلے کا درخت فیفاء ضلع میں بہت پرانا شمار ہوتا ہے۔ یہاں ہر گھر سے ملحق ایک فارم یا باغ ہے جہاں مختلف قسم کی زرعی اجناس پیدا ہوتی ہیں۔

ان میں بنیادی نوعیت کے دو درخت ہیں۔ یہ درخت کیلے اور کافی کے ہیں۔ آپ یہ درخت ہر گھر کے باغیچے میں پائیں گے۔ ضلع کے لوگ قدیم وقتوں سے ان دونوں کی زراعت کر رہے ہیں اور یہ سلسلہ آج بھی جاری ہے ... فیفاء ضلع میں پیدا ہونے والے کیلے کا درخت اپنے چھوٹے حجم کے سبب جانا جاتا ہے۔ موسمی تبدیلیوں اور شدت کا اس درخت پر اثر نہیں ہوتا اور یہ جوں کا توں کھڑا رہتا ہے۔

یہاں کا کیلا حجم میں چھوٹا اور سبز رنگ کا ہوتا ہے۔ اس کی پیداوار کسی بھی قسم کی کھاد یا کیمیائی مواد سے پاک ہوتی ہے۔ یہاں کیلے کے درخت کو صرف بارش کے پانی سے سیراب کیا جاتا ہے۔ فیفاء کے کیلے کو "الموز الجبلي" یعنی پہاڑی کیلے کا نام دیا گیا ہے۔ اس کا ذائقہ لذیذ اور منفرد ہوتا ہے۔ اس میں تُرشی بہت کم ہوتی ہے۔

اس کی خوشبو ہر کھانے والے کے دل کو بھاتی ہے۔ یہاں تک کہ اگر گھر میں کیلے کا ایک دانہ بھی ہو تو اس خوب صورت مہک پورے گھر میں پھیل جاتی ہے"۔

مقبول خبریں اہم خبریں